لبنان کے پانچ فوجی شامی سرحد پر جھڑپ میں ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption اس علاقے میں پہلی بھی شام میں سرگرم شدت پسند گروپ حملے کر چکے ہیں

لبنان کی فوج کا کہنا ہے کہ شام کی سرحد کے قریب شدت پسندوں سے جھڑپ میں پانچ فوجی ہلاک ہو گئے ہیں۔

اطلاعات کے مطابق آرسل کے قریب گاؤں راس بلالبک میں ہونے والی اس جھڑپ میں نو شدت پسند بھی مارے گئے ہیں۔

ابھی تک کسی شدت پسند گروپ نے اس حملے کی ذمہ داری قبول کی ہے۔

اس علاقے میں پہلی بھی شام میں سرگرم شدت پسند گروپ حملے کر چکے ہیں۔

گذشتہ سال اگست میں شدت پسندں نے آرسل کے علاقے پر حملے کر کے لبنانی فوجیوں کو اغوا کر لیا تھا۔

اغوا کیے جانے والے بعض فوجیوں کو بعد میں قتل کر دیا گیا تھا۔

آرسل میں اگست میں ہی شدت پسندوں کے ساتھ کئی روز تک جاری رہنے والی جھڑپوں کے نتیجے میں ہزاروں افراد نقل مکانی پر مجبور ہو گئے تھے۔

شام میں سال 2011 سے جاری تنازعے کی وجہ سے لبنان کی سکیورٹی کافی متاثر ہوئی ہے جبکہ ملک میں سیاسی بحران بھی جاری ہے۔

لبنان میں گذشتہ سال مئی سے صدر کا عہدہ خالی پڑا ہے۔

لبنان کے سرحدی علاقوں میں اس سے پہلے لبنانی عسکریت پسند تنظیم حزب اللہ اور شامی حکومت کے مخالف باغیوں کے مابین جھڑپیں ہو چکی ہیں۔ 50 لاکھ کی آبادی والے ملک لبنان میں شام سے آنے والے پناہ گزینوں کی تعداد بھی 10 لاکھ سے زیادہ ہے۔

اسی بارے میں