’یونان کو قرض میں مزید سہولت نہیں ملے گی‘

تصویر کے کاپی رائٹ Associated Press

جرمن چانسلر انگیلا میرکل نے اس بات کو خارج از امکان قرار دیا ہے کہ یونان کے قرض کا کوئی بھی حصہ معاف کیا جا سکتا ہے۔

انھوں نے کہا کہ یہ اس وجہ سے ممکن نہیں ہے کیونکہ بینکوں اور قرض دینے والوں نے پہلے ہی بہت زیادہ کٹوتیاں کر دی ہیں۔

تاہم میرکل نے کہا کہ وہ چاہتی ہیں کہ یونان یورپی یونین میں شامل ہو۔

یونان کی بائیں بازو کی سیاسی جماعت سیریزیا نے حالیہ انتخابات میں کامیابی حاصل کی ہے جس میں انھوں نے وعدہ کیا ہے کہ وہ یونان کا نصف قرض معاف کروائیں گے۔

یونان کے وزیرخزانہ نے کہا کہ تین عالمی مالیاتی ادارے جو یونان کے قرض کی نگرانی کرتے ہیں ایک ’ناکارہ کمیٹی‘ ہے۔

اس ادارے میں یورپی کمیشن، یورپین سینٹرل بینک اور عالمی مالیاتی فنڈ شامل ہیں اور اس نے مشترکہ طور پر یونان کی سابقہ حکومت کے ساتھ یونان کو دیوالیہ ہونے سے بچانے کے لیے 270 ارب ڈالر کا قرض منظور کیا تھا۔

تاہم نئے وزیرخزانہ یانس واروفاکس نے ان تینوں اداروں کے ساتھ کام کرنے سے انکار کرتے ہوئے مذاکرات نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور وہ تمام اقدامات واپس لینا شروع کیے ہیں جن کے بارے میں یونانی حکومت نے ان عالمی اداروں سے وعدے کیے ہوئے تھے۔

یوری یونین کے خزانہ کے معاملات کے کمشنر نے بی بی سی کو بتایا کہ یونان کو اپنے وعدوں کا احترام کرتے ہوئے شرائط پوری کرنی چاہیں۔

چانسلر میرکل نے ہیمبرگ کے اخبار کو بتایا کہ ’میں قرض میں تازہ کمی نہیں دیکھتی ہوں کیونکہ اس سے پہلے ہی مالیاتی اداروں، بینکوں نے یونان کے قرض میں سے اربوں ڈالر کم کیے ہوئے ہیں۔‘

یونان کا کل قرض 315 ارب ڈالر ہے جو اس کی مجموعی قومی پیداوار کا 175 فیصد ہے، باوجود اس کے کہ کئی قرض دہندگان نے اس کے قرض کو 2012 میں معاف کر دیا تھا۔

جرمن چانسلر نے کہا کہ ’ہماری پالیسی کا مقصد یہ تھا کہ یونان یورپی برادری کا حصہ رہے اور یورپ یونان کے ساتھ یکجہتی کا مظاہرہ کرتا رہے گا جیسا کہ وہ معاشی بحران سے متاثرہ دوسرے ممالک کے ساتھ کر رہا ہے اگر یہ ممالک اصلاحات اور بچت کے منصوبوں پر کام کرتے رہیں گے۔‘

جمعے کو جرمن وزیرخزانہ ولفگینگ شوبل نے یونان کو اس کی قرض معافی کے لیے کی جانے والی حکمت عملی پر خبردار کرتے ہوئے کہا کہ ’اس بارے میں ہمارے ساتھ بحث کا کوئی فائدہ نہیں اور ہم آسانی سے بلیک میل نہیں ہونے والے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

یونان کے قرض کا پروگرام 28 فروری 2015 کو ختم ہو رہا ہے اور اس کے بعد دیوالیہ ہونے سے بچنے کے لیے دیے جانے والے قرض کی آخری قسط کی رقم کے لیے مذاکرات پر بات چیت ہو گی۔

اسی بارے میں