یونان یورو زون کو چھوڑ دے گا: ایلن گرینسپین

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption ایلن گرینسپین امریکی فیڈرل ریزرو بینک کے سربراہ رہ چکے ہیں

امریکہ کے مرکزی بینک کے سابق سربراہ ایلین گرینسپین نے پیشگوئی کی ہے کہ یونان یورو زون کو چھوڑ دے گا۔

انہوں نے بی بی سی کو بتایا کہ انہیں کوئی ایسا (ادارہ یا ملک) نظر نہیں آتا جو یونان کی ڈانواں ڈول معیشت کو سنھبالنے کے لیے مزید قرضے دے سکے۔

یونان اپنے دیوالیہ ہونے سے بچاؤ کے لیے منصوبے پر دوبارہ مذاکرات کرنا چاہتا ہے مگرگرینسپین کا کہنا ہے کہ ’میں نہیں سمجھتا کہ یہ یونان کے یورو زون سے نکلے بغیر ممکن ہو گا۔‘

اس سے قبل برطانوی وزیرخزانہ جارج اوزبورن نے کہا تھا کہ یونان کے نکلنے کے برطانیہ پر گہرے اثرات ہوں گے۔

گرینسپین جو فیڈرل ریزرو کے 1987 سے 2006 تک چیئرمین رہ چکے ہیں نے کہا کہ ’میں سمجھتا ہوں کہ یونان بالآخر نکل جائے اور میں نہیں سمجھتا کہ یہ انہیں یا باقی یوروزون کو کوئی مدد فراہم کرتا ہے یہ وقت کی بات ہے جب سارے اس بات کو تسلیم کریں گے کہ علیحدگی میں ہی عافیت ہے۔‘

’مسئلہ یہ ہے کہ مجھے کسی طرح سے یورو جاری رہتا نظر نہیں آ رہا، جب یورو زون کے رکن ممالک سیاسی طور پر بھی مربوط نہیں تو مالیاتی طور پر مربوط ہونا کافی نہیں ہے۔‘

یونان میں انتخابات کے بعد سیاسی جماعت ’سیریزا‘ نے کامیابی حاصل کی تھی جس کے بعد یونانی وزرا یورپ کے دورے پر ہیں تاکہ وہ مالیاتی دیوالیہ پن سے بچنے کے لیے مذاکرات کے سلسلے میں حمایت حاصل کر سکیں۔

یہ اور بات ہے کہ برلن اور یورپین مرکزی بینک اس بات پر راضی ہوں کہ وہ یونان کو دیے گئے قرض کی شرائط کو تبدیل کریں۔

اسی بارے میں