بغداد:خود کش بم حملے میں 15 افراد ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption اتوار کے روز وزیر اعظم حیدر ال آبادی کی حکومت نے شہر میں 12 سے نافذ رات کے کرفیو کو ختم کر نے کا فیصلہ کیا تھا۔

حکام کے مطابق عراقی دارالحکومت بغداد میں ایک خود کش بم حملے میں کم سے کم 15 افراد ہلاک اور بہت سے دوسرے زخمی ہوئے ہیں۔

حکام کا مزید کہنا تھا کہ دھماکہ شہر کے شمال میں واقع شیعہ اکثریت والے علاقے کاظمیہ میں ہوا ہے۔

بم حملہ بھیڑ والے وقت میں کیا گیا اور گزشتہ دو ہفتوں کے دوران دارالحکومت میں جاری دہشت گردی کی لہر کے سلسلے کا یہ تازہ ترین واقعہ ہے۔

خیال رہے کہ حالیہ دنوں میں بغداد میں بڑھتے ہوئے دہشت گردی کے واقعات کے باوجود اتوار کے روز وزیر اعظم حیدر ال آبادی کی حکومت نے شہر میں 12 سے نافذ رات کے کرفیو کو ختم کر نے کا فیصلہ کیا تھا۔

وزیر اعظم حیدر ال آبادی کا کہنا ہے کہ انھوں نے یہ فیصلہ شہر میں زندگی کو معمول پر لانے کے لیے کیا ہے۔

پولیس کے مطابق پیر کے روز ہونے والے اس دھماکے کے وقت علاقہ کام پر جانے والے لوگوں سے بھرا ہو تھا۔

واضع رہے کہ اس علاقے میں شیعہ اسلام کے مقدس ترین مزارات واقع ہیں اور یہاں پر متعد بار پہلے بھی بم حملے کیے جاچکے ہیں۔

ہفتے کے روز بغداد کے ایک اور شیعہ آبادی والے علاقے میں خودکش حملے کے نتیجے میں 22 افراد ہلاک اور 50 سے زیادہ زحمی ہو گئے تھے۔

اس کے علاوہ شہر میں دو مارکیٹوں پر حملوں میں بھی ہلاکتیں ہوئی تھیں۔

حملوں کے بعد وزارتِ داخلہ کا موقف تھا کہ وہ نہیں سمجھتے کہ دھماکوں کا کرفیو ختم کر نے سے کوئی تعلق ہے۔

اسی بارے میں