امریکہ کے مشرقی علاقوں میں شدید سردی، 19 ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption محکمۂ موسمیات نے اختتام ہفتہ پر موسم میں قدرے بہتری آنے کی پیشنگوئی کی ہے

امریکہ کے مشرقی علاقوں میں منجمند کر دینے والی سردی سے کم از کم 19 افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

واشنگٹن، پیٹسبرگ، بالٹیمور اور میڈویسٹ میں سردی کے کئی ریکارڈ ٹوٹ گئے جہاں درجۂ حرارت منفی 40 ڈگری سنٹی گریڈ تک پہنچ گیا۔

شدید سردی سے اب تک 19 افراد ہلاک ہو چکے ہیں جبکہ سب سے زیادہ ہلاکتیں ریاست ٹینیسی میں ہوئیں جہاں معمول کے برعکس درجۂ حرارت میں نمایاں کمی آئی۔ جمعے کو ٹینیسی ریاست میں تین ہزار افراد بجلی سے محروم رہے۔

محکمۂ موسمیات کے مطابق کچھ علاقوں میں مزید بارشیں ہوں گی جبکہ اختتام ہفتہ پر درجۂ حرات میں ممعولی بہتری آ سکتی ہے۔

دوسری جانب کینیڈا کے علاقے اونٹاریو اور کیوبیک میں بھی سردی کی شدید لہر جاری ہے اور یخ بستہ ہواؤں کی وجہ سے ٹورنٹو میں درجۂ حرات منفی 29 اور شمالی اونٹاریو میں منفی 45 تک محسوس کیا جا رہا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption سردی سے نیاگرا آبشار بھی نصف سے زیادہ جم گئی

ٹورنٹو میں ایک تین سالہ بچہ گھر کے باہر گرم کپٹرے نہ پہننے کی وجہ سے سردی کی شدت سے ہلاک ہو گیا۔

شدید سردی کے نتیجے میں نیویارک کے نزدیک دریائے ہڈسن منجمد ہو گیا۔

امریکی مڈویسٹ میں مشی گن جھیل اور ایری جھیل 98 فیصد تک جم چکی ہیں۔

شکاگو میں درجۂ حرارت منفی 34 تک جانے کے بعد سکول بند کر دیے گئے تھے تاہم انھیں جمعے کو دوبارہ کھول دیا گیا تاہم ٹورنٹو میں شدید سردی کے سبب سکول بند رہے۔

اسی بارے میں