نیو اورلینز ایئرپورٹ کا حملہ آور زخموں کی تاب نہ لا کر چل بسا

تصویر کے کاپی رائٹ TWITTER
Image caption حملہ آور اس وقت ہسپتال میں زیرعلاج ہے

امریکہ کی ریاست نیو اورلینز میں پولیس کا کہنا ہے کہ جمعے کو بین الاقوامی ہوائی اڈے پر سکیورٹی اہلکاروں کی فائرنگ سے زخمی ہونے والا حملہ آور ہلاک ہوگیا ہے۔

63 سالہ رچرڈ وائٹ نے مبینہ طور پر ایک سکیورٹی اہلکار پر حشرات مارنے والے سپرے سے حملہ کیا اور اس کے بعد ایک محافظ کو چاقو مار دیا تھا۔

اس حملے کے بعد ہوائی اڈے پر موجود سکیورٹی اہلکار نے اسے گولیاں مار کر زخمی کر دیا تھا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ رچرڈ وائٹ کو ٹانگ، چہرے اور چھاتی پر گولیاں لگیں۔

حکام کے مطابق حملہ آور کو ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں اس کی سرجری کی گئی تاہم وہ جانبر نہ ہو سکا۔

امریکی حکام نے سنیچر کو ایک پریس کانفرنس میں بتایا ہے کہ حملہ آور کی دماغی حالت صحیح نہیں تھی

حکام کا کہنا ہے کہ اس شخص نے ایک سکیورٹی چیک پوسٹ پر حملہ کرنے کی کوشش کی تھی اور اس واقعے میں ایئرپورٹ پر موجود متعدد افراد کو معمولی زخم بھی آئے۔

پولیس افسر جیفرسن پیرش کے مطابق ابھی تک یہ واضح نہیں کہ وائٹ ایئرپورٹ پر مسافر کے طور پر موجود تھے کہ نہیں تاہم عینی شاہدین کے بیانات کی مدد سے واقعے کی تحقیقات جاری ہیں۔

انھوں نے مزید بتایا کہ رچرڈ وائٹ ٹیکسی چلاتے تھے اور ان کا جرائم سے متعلق کوئی ریکارڈ دستیاب نہیں ہے۔

ایئرپورٹ پر موجود مسافروں کے مطابق حملے کے وقت افراتفری کے مناظر تھے۔

فلوریڈا سے آنے والے ایک مسافر جریمی ڈائڈر کے مطابق انھوں بورڈنگ پاس حاصل کرنے والے چیک پوائنٹ پر لگی قطار میں ایک شخص کو لوگوں کو لوگوں سے دھکم پیل کرتے ہوئے آگے بڑھتے ہوئے دیکھا۔

اس کے بعد دو گولیاں چلیں اور وہاں موجود افراد فرش پر لیٹ گئے۔

حکام کا کہنا ہے کہ ایئر پورٹ کا وہ حصہ جہاں یہ واقعہ پیش آیا سنیچر کو بند رہا تاہم دیگر ایئرپورٹ معمول کے مطابق کام کرتا رہا۔

اسی بارے میں