امریکی فوجیوں کو دولتِ اسلامیہ کی آن لائن دھمکی

تصویر کے کاپی رائٹ AFP Getty
Image caption شام اور عراق میں سرگرم دولتِ اسلامیہ کے خلاف امریکی قیادت میں اتحادی کارروائیاں کر رہے ہیں

امریکہ کی وزارت دفاع کا کہنا ہے کہ وہ اپنے 100 کے قریب فوجيوں کو دی گئی آن لائن دھمکی کی تحقیقات کر رہی ہے۔

امریکہ کا کہنا ہے کہ یہ دھمکی مبینہ طور پر شدت پسند تنظیم دولتِ اسلامیہ کی جانب سے دی گئی ہے۔

اس شدت پسند تنظیم سے منسلک ایک ویب سائٹ پر ان افراد کے نام اور پتوں کی فہرست جاری کی گئی ہے اور دولتِ اسلامیہ کے حامیوں سے انہیں ہلاک کر دینے کو کہا گیا ہے۔

یہ معلومات جاری کرنے والے گروپ کا کہنا ہے کہ انھوں نے انٹرنیٹ سروز اور ڈیٹابیس ہیک کر کے یہ معلومات جمع کی ہیں جبکہ امریکی حکام کے مطابق ان میں سے زیادہ ڈیٹا ویسے ہی آن لائن دستیاب تھا۔

پینٹاگون کے ایک اہلکار نے کہا ہے وہ اس پیغام کی قانونی حیثیت کی تصدیق نہیں کر سکتے۔

امریکی سکیورٹی ذرائع نے بی بی سی کو بتایا ہے کہ جن لوگوں کے نام اس فہرست میں ہیں، ان کے اہل خانہ کو اس بارے میں مطلع کیا جا رہا ہے۔

خود کو دولتِ اسلامیہ کے ہیکنگ ڈویژن کے نام سے متعارف کروانے والے گروپ نے جن لوگوں کے پتے، تصاویر اور نام جاری کیے ہیں ان کے بارے میں یہ بھی کہا ہے کہ انھوں نے تنظیم کے خلاف امریکی کارروائیوں میں حصہ لیا ہے۔

گروپ نے امریکہ میں مقیم اپنے حامیوں سے کہا ہے کہ ’وہ آخری قدم اٹھائیں‘ اور ان افراد سے ’نمٹیں‘۔

امریکی بحریہ کے ایک ترجمان نے بی بی سی کو بتایا ہے کہ ان فوجیوں سے کہا گیا ہے کہ وہ اپنی آن لائن سرگرمیوں پر نظر رکھیں اور اپنی پرائیویسی سیٹنگز بھی تبدیل کریں۔

اسی بارے میں