’زہر نہ ملے تو فائرنگ سکواڈ استعمال کریں‘

Image caption مہلک دوا کی عدم دستیابی کی صورت میں قیدی کو گولی مار کر موت کی سزا پر عمل درآمد ہو گا

یوٹا امریکہ کی وہ پہلی ریاست بن گئی ہے جہاں موت کی سزا پر عمل درآمد کرنے کے لیے مہلک انجیکشن کی دعم دستیابی پر فائرنگ سکواڈ کا استعمال کرنے کی اجازت مل گئی ہے۔

یوٹا کے گورنر گیرے ہربرٹ نے قانونی مسودے پر دستخط کیے، جنھوں نے اس سے قبل خود ہی اس طریقہ سزا کو ’تھوڑا دہشت ناک‘ قرار دیا تھا۔

اس موقعے پر ان کا کہنا تھا کہ اگر جان لیوا انجیکشن کی دوا کم ہوتی ہے تو اس صورت میں ریاست کو کسی متبادل کی ضرورت ہے۔

تاہم دوسری جانب موت کی سزا پر فائرنگ سکواڈ کے ذریعے عمل درآمد کے محالفین کہتے ہیں کہ اس سے ریاست پسماندہ لگے گی۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption موت کے قیدی کو سزا پر عمل درآمد کے لیے اس بستر پر جکڑ کے جان لیوا انجیکشن لگایا جاتا ہے

اس وقت بہت سی امریکی ریاستوں کو جان لیوا انجیکشن کی دوا کے حصول میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے کیونکہ یہ دوا یورپ میں بنائی جاتی ہے اور یورپی ممالک موت کی سزا کے مخالف ہیں۔ یورپی ممالک نے امریکہ کو یہ دوا بیچنے سے انکار کر دیا ہے۔

یاد رہے کہ امریکہ میں ناقص انداز میں سزائے موت دینے کی بِنا پر بہت سے مقدمے بھی سامنے آئے ہیں۔

اسی بارے میں