’جوہری پروگرام پر حتمی معاہدے کی کوئی ضمانت نہیں‘

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption سوئٹزرلینڈ کے شہر لوزین میں گذشتہ ہفتے مذاکرات کے طویل سلسلے کے بعد ایران اور چھ بڑی طاقتوں کے درمیان ایران کے متنازع جوہری پروگرام کے مستقبل کے بارے میں معاہدے کے ڈھانچے پر اتفاق ہوا تھا

ایران کے رہبر اعلیٰ آیت اللہ خامنہ ای نے کہا ہے ایران اور چھ بڑی طاقتوں کے درمیان اس کے جوہری پروگرام کے بارے میں حتمی معاہدے کی کوئی ’ضمانت‘ نہیں ہے۔

اس سے پہلے ایران کے صدر حسن روحانی یہ کہہ چکے ہیں کہ ان کا ملک حتمی معاہدے پر اس وقت تک دستخط نہیں کرے گا جب تک ایران پر عائد پابندیاں ختم نہیں کی جاتیں۔

خیال رہے کہ سوئٹزرلینڈ کے شہر لوزین میں گذشتہ ہفتے مذاکرات کے طویل سلسلے کے بعد ایران اور چھ بڑی طاقتوں کے درمیان ایران کے متنازع جوہری پروگرام کے مستقبل کے بارے میں معاہدے کے ڈھانچے پر اتفاق ہوا تھا۔

اس معاہدے پر اتفاق کے بعد ایرانی اور امریکی حکام اپنے اپنے ملک میں سخت گیر رہنماؤں کو اس معاہدے کی حمایت پر راضی کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

اس معاہدے کے مطابق:

  • ایران اپنے سینٹری فیوجوں میں دو تہائی کمی لائے گا اور اپنے ذخیرہ شدہ افزودہ یورینیئم کو بھی کم کرے گا
  • ایران کے فالتو سینٹری فیوج اور افزدوگی کی تنصیبات پر عالمی ادارہ برائے جوہری توانائی آئی اے ای اے نظر رکھے گا
  • آئی اے ای اے ایران کی تمام جوہری تنصیبات کا باقاعدگی سے معائنہ کرتی رہے گی
  • ایران اپنے ارک میں واقع بھاری پانی کے ری ایکٹر میں ایسی تبدیلیاں کرے گا کہ وہاں ہتھیار بنانے کے اہل پلوٹونیئم نہ بنایا جا سکے
  • ایران پر عائد امریکہ اور یورپی یونین کی پابندیاں مرحلہ وار ختم کی جائیں گی لیکن اگر ایران نے اپنی ذمہ داریاں پوری نہیں کیں تو انھیں دوبارہ عائد کر دیا جائے گا

ایران کے رہبر اعلیٰ آیت اللہ خامنہ ای نے اپنی ویب سائٹ پر ایک بیان میں کہا: ’ممکن ہے کہ چھ عالمی طاقتیں ہماری ملک کو معاہدے کی تفصیلات میں گھیرنا چاہتی ہوں۔‘

ان کا کہنا تھا کہ وہ امریکہ کے ساتھ مذاکرات کے لیے کبھی بھی پر امید نہیں رہے۔

خامنہ ای کے بیان میں مزید کہا گیا ہے: ’میں پر امید نہیں تھا تاہم میں نے مذاکرات سے اتفاق کیا اور ان کی حمایت کی۔‘

ایران کے رہبر اعلیٰ نے ملک کے صدر حسن روحانی کے بیان کا حوالہ دیا جس میں انھوں نے کہا تھا کہ ان کا ملک حتمی معاہدے پر اس وقت تک دستخط نہیں کرے گا جب تک ایران پر عائد پابندیاں ختم نہیں کی جاتیں۔

ادھر امریکی حکام نے پیر کو ایک بیان میں کہا تھا کہ ایران پر عائد پابندیاں مرحلہ وار ختم کی جائیں گی۔

وائٹ ہاؤس کے ترجمان جوش ارنسٹ نے میڈیا کو بتایا کہ امریکہ کا کبھی بھی یہ موقف نہیں رہا کہ ایران کے خلاف عائد تمام پابندیاں پہلے ہی دن اٹھا لی جائیں گی۔

اسی بارے میں