دولتِ اسلامیہ کے ہاتھوں 30 عیسائیوں کے ’قتل‘ کی ویڈیو جاری

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption قتل کیے جانے والے افراد کے بارے میں خیال ہے کہ ان کا تعلق لیبیا میں قائم ایتھیوپین چرچ سے تھا

مشرقِ وسطیٰ کے متعدد ممالک میں سرگرم شدت پسند تنظیم دولت اسلامیہ کی طرف سے جاری کی جانے والی ایک ویڈیو میں ایتھوپیا سے تعلق رکھنے والے 30 عیسائیوں کو قتل کرتے دکھایا گیا ہے۔

ویڈیو میں ایک شخص کا سر قلم کرتے ہوئے اور دیگر افراد کو صحرا میں سر پر گولیاں لگتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے۔

قتل کیے جانے والے افراد کے بارے میں خیال ہے کہ ان کا تعلق لیبیا میں قائم ایتھیوپین چرچ سے تھا جس پر دولت اسلامیہ کے جنگجوؤں نے قبضہ کرلیا تھا۔

اسی طرح کی ایک ویڈیو فروری میں سامنے آئی تھی جس میں مصر کے 21 قبطی عیسائیوں کا سر قلم کرنے کے مناظر دکھائے گئے تھے۔

ویڈیو میں ایک اسلحہ بردار نقاب پوش شخص عیسائیوں کو اسلام قبول کرنے یا خصوصی ٹیکس ادا کرنے کا دھمکی آمیز پیغام بھی دیتا ہے۔

حالیہ مہینوں میں دولت اسلامیہ کی جانب سے ایسی متعدد ویڈیوز سامنے آئی ہیں جس میں اغوا کیے گئے افراد کو قتل کرتے دکھایا گیا ہے۔

ایسی ویڈیوز کی دنیا بھر میں ان کی مذمت کی گئی ہے۔

واضح رہے کہ دولت اسلامیہ کے جنگجو عراق اور شام کے سرحدی علاقوں پر قابض ہیں اور انھیں مشرق وسطیٰ اور شمالی افریقہ بشمول لیبیا میں جہادی گروہوں کی حمایت بھی حاصل ہے۔

اسی بارے میں