گوشت خور گائے

تصویر کے کاپی رائٹ KENYA CITIZEN TV
Image caption ڈاکٹروں کے مطابق گائے یہ کام ممکنہ طور پر جسم میں ضروری معدنیات کی کمی کے باعث کر رہی ہے

کینیا میں ایک ایسی گائے ہے جس نے چارے کو چھوڑ کر بھیڑوں کو بطور خوراک کھانا شروع کر دیا ہے۔

بی بی سی مانیٹرنگ کے مطابق یہ گوشت خور گائے کینیا کے جنوب مغرب میں واقع دیہی علاقے ناکورو کے ایک کسان چارلس مابولیو کے باڑے میں موجود ہے۔

آدم خور انسان

چارلس مابولیو نے بتایا کہ ایک صبح انھوں نے دیکھا کہ گائے ان کی ایک بھیڑ کو زخمی کرنے کے بعد کھا رہی ہے۔ یہ سلسہ رکا نہیں اور اگلے ہی دن وہاں سے ایک اور بھیڑ غائب تھی۔

کسان کا کہنا ہے کہ پہلے واقعے پر ہم نے سوچا کہ گائے بھوکی ہے اس کی خواراک کو دگنا کر دیا جائے مگر ایسا کرنے کے باوجود گائے نے بھیڑوں کا پیچھا جاری رکھا۔

خیال رہے کہ گائے سبزی خور جانور ہے۔

مقامی زرعی افسر البرٹ کبوگی کہتے ہیں کہ یہ خشک موسم ہے اور اس موسم میں بہت سے جانوروں کو چارے سے وہ غذائی جزو نہیں مل پاتے جو عام حالات میں دستیاب ہوتے ہیں۔ اس لیے ہو سکتا ہے کہ یہ غذائی قلت کے باعث ہو۔

خیال رہے کہ سنہ 2007 میں بھارت کی مغربی ریاست بنگال میں بھی گائے کے ایک چھوٹے سے بچے نے مرغیاں کھانا شروع کر دی تھیں۔

مویشیوں کا علاج کرنے والے ایک ڈاکٹر کا کہنا ہے کہ ایسا غیر معمولی صورت حال میں ہی ہوسکتا ہے اور ان کے خیال سے یہ گائے کے جسم میں اہم معدنیات کی قلت کے باعث ہو رہا ہے۔

اسی بارے میں