سویڈن: اسانج کے وارنٹ گرفتاری کے خلاف اپیل مسترد

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption اسانج کے وکیل نے سویڈش سپریم کورٹ کے فیصلے پر مایوسی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ جس طرح کیس کو ہینڈل کیا گیا اس سے انہیں ضرور مایوسی ہوئی ہے۔

سویڈن کی ایک عدالت نے مبینہ جنسی زیادتی کے کیس میں وکی لیکس کے بانی جولین اسانج کی گرفتاری کے وارنٹ کے خلاف دائر کردہ اپیل مسترد کر دی ہے۔

یہ وارنٹ سویڈن نے سنہ 2010 میں اسانج پر جنسی زیادتی کے دو الزامات لگنے کے بعد جاری کیے تھے۔

اسانج ان الزامات سے انکار کرتے آئے ہیں اور وہ جون 2012 سے لندن میں اکواڈور کے سفارت خانے میں پناہ لیے ہوئے ہیں۔

گرفتاری کے وارنٹ کے خلاف اپیل مسترد ہونے کے بعد سویڈش حکام کا اسانج سے تحقیقیات کے لیے لندن آنے کے امکانات ظاہر کیے جا رہے ہیں۔

سویڈن کی سپریم کورٹ کا کہنا ہے کہ اسانج کی گرفتاری کے وارنٹ منسوخ کرنے کی کوئی وجہ نہیں کیونکہ ان سے الزامات کی تحقیقات کے اقدامات بھی کیے جا چکے ہیں۔

اسانج کے وکیل نے سویڈش سپریم کورٹ کے فیصلے پر مایوسی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ جس طرح کیس کو ہینڈل کیا گیا اس سے انہیں ضرور مایوسی ہوئی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ان کے دلائل کو مکمل طور پر سنے بغیر ہی فیصلہ کر دیا گیا۔

تینتالیس سالہ اسانج اپنے اوپر لگائے گئے الزامات کو اس سازش کا حصہ قرار دیتے ہیں جس میں ان کے بقول انہیں امریکہ کے حوالے کیا جائے گا۔

اسی بارے میں