بجلی کی قلت کے دلچسپ پہلو

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

افریقی ملک گھانا میں گزشتہ تین سالوں سے بجلی کی قلت ہے۔ مندرجہ ذیل اس قلت کے کچھ نتائج ہیں جن کی توقع نہ تھی۔

بھنبھنانے کی آواز

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

وسط اکرا سے گزرتے ہوئے آپ کو عجیب بھنبھنانے کی آواز آئے گی۔ یہ آواز کان کے قریب مچھر کے بھنبھنانے کی آواز سے ملتی جلتی ہے۔

اصل میں یہ آواز بازار میں جنریٹرز چلنے کی آواز ہے۔ مہنگے جنریٹرز کی آواز نہیں ہوتی لیکن زیادہ تر دکانوں پر سستے جنریٹرز ہیں جن کی آواز مل کر بھنبھنانے کی آواز بن جاتی ہے۔

سیاستدانوں کے نام

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

گھانا میں جب بھی کوئی بحران پیدا ہوتا ہے اور سیاستدان اس کو حل کرنے میں ناکام رہتے ہیں تو ان کا نام رکھ دیا جاتا ہے۔

بجلی کی قلت کے باعث صدر جان مہاما کا نام ’مسٹر ڈمسر‘ رکھ دیا گیا ہے جو اصل میں لوڈ شیڈنگ کے لیے مشہور نام ہے۔

مقامی زبان میں ’ڈم‘ کا مطلب آن ہے اور ’سر‘ کا مطلب آف ہے۔

صدر مہاما کو معلوم ہے کہ ان کا کیا نام رکھا گیا ہے اور وہ کھلے عام اپنا ہی مذاق اڑاتے ہیں۔

خاندان کے لیے زیادہ وقت

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

ایک خاتون نے کہا کہ جب سے بجلی کی قلت ہوئی ہے تو مردوں کا فٹ بال دیکھنا ختم ہو گیا اور اس کے باعث اس خاتون کو اپنا شوہر اچھا لگنے لگ گیا ہے۔

’اب ہم اپنی گیم کھیلتے ہیں۔‘

دوسری جانب سوشل میلایا سے ہٹ کر خاندانوں نے اکٹھے زیادہ وقت گزارنا شروع کر دیا ہے کیونکہ موبائل فونز اور لیپ ٹاپس چارج نہیں ہو سکتے۔

موبائل کی روشنی میں جنم

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

کچھ ہسپتالوں کے پاس اتنی رقم نہیں کہ جنریٹرز چلا سکیں۔ اس لیے جب روشنی جاتی ہے تو دائیاں ٹارچ اور موبائل فون کی لائٹ تلے کام کرتی ہیں۔

تازہ کھانا

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

جن لوگوں کے پاس جنریٹرز بھی ہیں وہ بھی آدھی رات کو جنریٹر بند کردیتے ہیں۔ اس کا مطلب ہے کہ فرج میں کھانا نہیں رکھا جاسکتا۔

میرے لیے یہ ایک اچھی بات ہے کیونکہ میری بیوی اکٹھا کھانا بنا کر فرج میں رکھ دیتی تھی۔ اب چونکہ کھانا فرج میں نہیں رکھا جاسکتا تو ہر روز کھانا بنتا ہے اور مجھے تازہ کھانا ملتا ہے۔

بجلی کے بل میں کمی

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

بجلی کی قلت کا ایک اور فائدہ یہ ہے کہ بجلی کے بلوں میں کمی ہوئی ہے۔

گھانا میں لوگ پری پیڈ بجلی کے میٹر استعمال کرتے ہیں اس لیے بچت فوری ہوتی ہے۔

گاڑیوں میں زیادہ وقت

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

بجلی کی قلت کے باعث زیادہ سے زیادہ لوگ گاڑیوں میں ایئر کنلایشنر لگا کر ریڈیو سنتے ہیں۔ سونے سے چند گھنٹے قبل دو گھنٹوں کے لیے گاڑی میں اے سی لگا کر لوگ بیٹھتے ہیں۔ اور جب گرمی زیادہ ہوتی ہے تو لوگ گاڑی ہی میں سو جاتے ہیں۔