نیوزی لینڈ کے قومی نشان کیوی کو معدوم ہونے سے بچانے کی کوششیں

تصویر کے کاپی رائٹ MAUNGATAUTARI TRUST
Image caption ’اگر ہم نے کیوی کی تعداد میں کمی کو نہیں روکا تو خدشہ ہے کہ ہم کیوی کو ہمیشہ کے لیے کھو دیں گے‘

نیوزی لینڈ کی حکومت نے اپنے قومی نشان کیوی کی نسل معدوم ہونے کی تنبیہہ پر قومی پرندے کو بچانے کے لیے لاکھوں ڈالر مختص کیے ہیں۔

نیوزی لینڈ میں قُدرتی وسائل کے تحفُظ کے حامیوں نے حکومت کی جانب سے کیوی کو بچانے کے لیے 83 لاکھ ڈالر مختص کرنے کے اقدام کو سراہا ہے۔

نیوزی لینڈ کے ٹی وی 3 کے مطابق وزیر برائے قُدرتی وسائل میگی بیری کا کہنا ہے کہ ملک کی شناخت بننے والے اس پرندے کو بچانے کے لیے مزید اقدامات کی ضرورت ہے۔

’اگر ہم نے کیوی کی تعداد میں کمی کو نہیں روکا تو خدشہ ہے کہ ہم کیوی کو ہمیشہ کے لیے کھو دیں گے۔‘

کیوی ایک ایسا پرندہ ہے جو اڑنے کے قابل نہیں۔ یہ پرندہ گھریلو مرغی کے برابر حجم رکھتا ہے اور اپنی جسامت کے اعتبار سے یہ سب سے بڑا انڈہ دیتا ہے۔

کیوی کی تعداد میں کمی نیولے اور قاقم جیسے جانوروں کے باعث آئی ہے۔ اس کے علاوہ اسے کتوں سے بھی خطرہ ہے۔

ایک اندازے کے مطابق ہر ہفتے ان شکاری جانوروں کے باعث 27 کیوی مارے جاتے ہیں۔

پچھلے سال ایک رپورٹ میں کہا گیا تھا کہ اگر کیوی اسی طرح کم ہوتے رہے تو ہماری اسی نسل میں کیوی نیوزی لینڈ سے ختم ہو جائیں گے۔

کیوی پرندے کو بچانے کے لیے کام کرنے والی تنظیم ’دا کیویز‘ کا کہنا ہے کہ حکومت کی جانب رقم مختص کیے جانے سے کیوی کی نسل کو بچانے میں مدد ملے گی۔ اس تنظیم کا کہنا ہے کہ اس وقت اس سلسلے میں 90 تنظیمیں کام کر رہی ہیں۔

کیوی کی نسل بچانے کے لیے کام کرنے والے ایک کارکن میتھو لارک نے بی بی سی کو بتایا کہ جنگلات میں براؤن کیوی کی تعداد آٹھ ہزار سے کم رہ گئی ہے اور حکومت کی جانب سے مختص کی گئی رقم سے ان کی تعداد میں اضافہ کیا جا سکتا ہے۔

اسی بارے میں