جب ہاتھی نے سیلفی بنائی

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption اس تصویر کو اب تک ہزاروں افراد لائیک کر چکے ہیں

اگر آپ موبائیل فون کے کیمرے سے بڑے منظر کی تصویر کھینچنا چاہتے ہیں تو سیلفی سٹک کو بھول جائیے اور ہاتھی کی مدد لیجیے۔

کچھ ایسا ہی ہوا کینیڈا سے تعلق رکھنے والے بائیس سالہ کرسچین لا بلانک نامی نوجوان کے ساتھ، جو ان دنوں تھائی لینڈ میں تعطیلات گزار رہے ہیں۔

کرسچین ایک ہاتھی کو کیلے کھلا رہے تھے جب ہاتھی نے ان کے موبائل سے سیلفی بنا ڈالی۔

کرسچین لا بلانک بتاتے ہیں:’جب میرے پاس کیلے ختم ہوگئے تو ہاتھی نے اپنی سونڈ سے میرا موبائل فون اٹھا لیا۔ خوش قسمتی اس وقت کیمرا ریکارڈنگ کر رہا تھا اور تمام منظر کیمرے کی آنکھ نے محفوظ کر لیا۔‘

کچھ دیر فلم بنانے کے بعد ہاتھی نے کیمرا زمین پرا گرا دیا۔ جب کرسچین نے یہ مناظر دیکھے تو ان کے ذہن میں پہلا خیال یہ آیا کہ ’کیا بہترین سیلفی ہے‘ اور جلد ہی انہوں نے یہ تصاویر سوشل میڈیا پر شئیر کر دیں۔

اس تصویر کو اب تک ہزاروں افراد لائیک کر چکے ہیں۔

لیکن ایک بڑا سوال یہ ہے کہ کیا یہ ایک ہاتھی کی جانب سے بنائی جانے والی دنیا کی پہلی سیلفی ہے؟ یا ایلفی ہے، جیسے اس سوشل میڈیا پر پکارا جا رہا ہے۔

اس کا جواب نفی میں ہے کیونکہ گزشتہ برس ایک ہاتھی نے برطانیہ کے ایک سفاری پارک میں سیلفی لی تھی ایسا اس وقت ہوا تھا جب ایک شخص نے غلطی سے اپنا فون گرا دیا تھا اور ہاتھی نے اسے خوراک سمجھ کر کھانے کی کوشش کی تو سیلفی بن گئی۔

اسی بارے میں