لیبیا: دولتِ اسلامیہ کا سرت کے ہوائی اڈے پر قبضہ

سرت تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption سرت معمر قذافی کا آبائی شہر تھا اور حزبِ مخالف کے باغیوں نے اسے اپنا اڈہ بنایا ہوا تھا

لیبیا میں دولتِ اسلامیہ کے جنگجوؤں نے کہا ہے کہ انھوں نے ملک کے دیگر علاقوں میں پیش قدمی کرتے ہوئے ساحلی شہر سرت کے ہوائی اڈے پر بھی قبضہ کر لیا ہے۔

اس خبر کا اعلان دولتِ اسلامیہ اور جمعرات کو ہوائی اڈے سے پسپا ہونے والی لیبیا کی ملیشیا نے کیا ہے۔

گذشتہ ہفتے سرت کے زیادہ تر علاقے پر دولتِ اسلامیہ نے قبضہ کر لیا تھا۔ یاد رہے کہ سرت سابق لیبیائی رہنما معمر قذافی کا آبائی شہر ہے۔

لیبیا میں کون کیا چاہتا ہے؟

گروہ نے یہ بھی کہا ہے کہ اس نے ’گریٹ مین میڈ روور‘ کے پانی کے پروجیکٹ پر بھی قبضہ کر لیا ہے۔

آبپاشی کے اس منصوبے کو دنیا کا سب سے بڑا پانی کا منصوبہ کہا جاتا ہے، اور یہ لیبیا کے شہروں کو تازہ پینے کا پانی فراہم کرتا ہے۔ یہ حزبِ مخالف کی بیٹالین 166 کا بھی اڈہ تھا لیکن اب وہ یہاں سے بھاگ چکی ہے۔

بیٹالین اور دیگر اسلامی گروہوں کا طرابلس پر قبضہ ہے تاہم ان کی حکومت کو بین الاقوامی طور پر تسلیم نہیں کیا گیا ہے۔

اسی بارے میں