اے ٹی ایم کے ذریعے پانی کا حصول

پانی دینے کی مشین تصویر کے کاپی رائٹ bbc

مشرقی افریقی ملک کینیا میں اب ایک کچی آبادی کے مکینوں کو صاف پانی نقدی نکالنے کی مشینوں جیسے ڈسپنسروں سے ملا کرے گا۔

پینے کا صاف پانی دینے والی اے ٹی ایم کی طرح کی مشین دارالحکومت نیروبی میں متھارے مشیمونی کی کچی آبادی میں نصب کی گئی ہے۔

اب تک ایسی کچی آبادیوں کے مکین پانی بیچنے والوں پر انحصار کرتے رہے ہیں جو پانی مہنگا بھی دیتے تھے اور اکثر وہ آلودہ بھی ہوتا تھا۔

اب اس نئے نظام کے تحت لوگ ایک سمارٹ کارڈ کے ذریعے اے ٹی ایم مشینوں سے پانی حاصل کرسکتے ہیں۔ یہ سمارٹ کارڈ پانی سپلائی کرنے والے ادارے کے دفاتر یا موبائل فون کے ذریعے چارج کیے جا سکیں گے۔

تصویر کے کاپی رائٹ bbc

ابتدائی طور پر متھارے میں ایسی چار مشینیں نصب کی جارہی ہیں لیکن توقع ہے کہ سکیم کو وسعت بھی دی جائے گی۔

اِس سے ملتی جلتی مشینیں دیہی علاقوں میں استعمال ہوتی رہی ہیں لیکن پہلی بار کسی بڑے شہر میں ان کا تجربہ کیا جارہا ہے۔

نیروبی واٹر اینڈ سیوریج کمپنی کے مطابق وہ 20 لیٹر صاف پانی کے لیے نصف کینیائی شلنگ (مقامی کرنسی) قیمت لے گی جو تجارتی طور پر پانی بیچنے والوں سے بہت کم ہے۔ پانی کے تاجر اتنی مقدار کے لیے پچاس شلنگ (مقامی کرنسی) لیتے ہیں۔

صاف پانی تک رسائی اقوام متحدہ کے ملینیئم اہداف میں سے ایک ہے لیکن اندازہ یہ ہے کہ ابھی تک ساری دنیا میں 70 کروڑ لوگ اس سے محروم ہیں۔

اسی بارے میں