’یہ ہے پرل ہاربر کا بدلہ‘

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption امریکی خواتین ٹیم کی مداح جیت کے بعد خوشی کا اظہار کر رہی ہیں

امریکہ کی خواتین فٹبال ٹیم کی جانب سے جاپان کو فائنل میں شکست کے دینے بعد ٹوئٹر پر ایک ہنگامہ شروع ہو گیا۔

یہ ہنگامہ اس وقت شروع ہوا جب چند مداحوں نے امریکی خواتین ٹیم کی اس فتح کا تعلق جاپان کی جانب سے سنہ 1941 میں امریکی بحری اڈے پرل ہاربر پر کیے جانے والے حملے سے جوڑ دیا۔

ایک امریکی صارف کلائیڈ ریورز نے ٹویٹ کی: ’یہ ہے پرل ہاربر کا بدلہ۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

پرل ہاربر نامی ہیش ٹیگ چند گھنٹوں کے دوران ہی امریکی ٹوئٹر صارفین میں ٹاپ ٹرینڈنگ کرنے لگا اور اس پر ہزاروں ٹویٹس کی گئیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

ان کے اس ٹویٹ کو 8,500 سے زائد بار ری ٹویٹ کیا گیا اور یہ 11,000 سے زائد بار پسندیدہ ٹویٹ رہا۔

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

ایک اور صارف شان گارشیا نے ٹویٹ کیا: ’جاپانیوں نے پرل ہاربر کو تباہ کیا تاہم ہم نے ان کے خواب چکناچور کر دیے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

دیگر صارفین نے امریکی کی جانب سے جاپانی شہروں ناگا ساکی اور ہیرو شیما پر ایٹم بم گرائے جانے کا حوالہ دیا جبکہ ایک اور صارف نے یہاں تک کہہ دیا: ’کوئی ہماری خواتین ٹیم کو یہ بتانا کیوں بھول گیا کہ ہم پہلے ہی پرل ہاربر کا بدلہ لے چکے ہیں۔‘

دوسری جانب متعدد ٹوئٹر صارفین نے چند مداحوں کی جانب سے منفی رویے پر تنقید بھی کی۔

ایک ٹوئٹر صارف ٹیلر پیری نے ٹویٹ کی: ’پرل ہاربر کوئی مذاق نہیں تھا، ہیرو شیما اور ناگاساکی بھی مذاق نہیں تھا، یہ جنگِ عظیم دوم نہیں ہے بلکہ یہ سنہ 2015 میں خواتین کا فٹبال میچ ہے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption امریکہ کی خواتین فٹبال ٹیم نے اتوار کو جاپان کو دو کے مقابلے میں پانچ گول سے شکست دے تھی

ایک اور صارف نے ٹویٹ کی: ’کیا ہم سب صرف کھیل کو دیکھ کر اس کا مزا نہیں لے سکتے؟‘

دیگر ٹوئٹر صارفین جاپانی مداحوں کے دفاع کرنے لگے۔

ایک ٹوئٹر صارف گنج نے کہا: ’آپ مذاحیہ نہیں ہیں، آپ ایک خوفناک انسان ہیں۔‘