نیویارک سٹاک ایکسچینج میں تکنیکی خرابی

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption سٹاک ایکسچنج کو ہیک کیے جانے کی خبروں کی تردید کی گئی ہے

نیوریاک سٹاک ایکسچینج کی ایک ترجمان نے کہا ہے کہ سٹاک ایکسچینج میں شیئرز کی ٹریڈنگ معطل ہونے کی وجہ ہیکنگ نہیں بلکہ تکنیکی خرابی تھی۔

ترجمان نے کہا ہے کہ جوں ہی ممکن ہوا اس واقعہ کی مذید تفصیلات جاری کر دی جائیں گی۔ خبرایجنسی روئٹرز کا کہنا ہے کہ تمام کھلے آڈرز منسوخ کیے جا رہے ہیں۔

نیسڈیک انڈیکس میں کوئی تکنیکی خرابی نہیں ہوئی اور اس کا کہنا ہے کہ وہ ان سٹاک کی ٹریڈنگ کر رہا ہے جو نیویارک سٹاک ایکسچینج کی لسٹ پر ہیں۔

وال سٹریٹ جنرل کی ویب سائٹ اور یونائٹیڈ ایئرلائنز نے بھی کہا ہے کہ انھیں تکنیکی مسائل کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ تاہم امریکی حکام کہتے ہیں کہ دونوں معاملوں کا آپس میں کوئی تعلق نہیں۔

نیویارک سٹاک ایکسچینج کی ایک ترجمان کا کہنا تھا ’اس وقت ہمیں ایک تکنیکی خرابی کا سامنا ہے جسے ہم جتنا جلد ممکن ہو دور کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ جونہی ممکن ہوا ہم اپ ڈیٹ جاری کر دیں گے اور اس مسئلے کے فوری حل کی بھرپور کوشش کر رہے ہیں۔‘

تاہم بعد میں نیویارک سٹاک ایکسچینج نے ایک ٹویٹ میں کہا کہ یہ اندورنی نوعیت کی تکنیکی خرابی تھی نہ کہ سائبر حملہ۔

وائٹ ہاؤس کے مطابق صدر براک اوباما کو اس واقعے کے بارے میں آگاہ کر دیا گیا ہے۔ سیکوریٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن کا کہنا ہے کہ وہ ’صورتِ حال کی بہت غور سے نگرانی کر رہا ہے۔‘

کاروبار معطل ہونے سے پہلے جب صبح ساڑھے گیارہ بجے کے قریب کام شروع ہوا تو امریکی مارکیٹیں گراوٹ کا شکار تھیں۔ چین کی مارکیٹوں میں مندی کے عالمی معاشی نمو پر اثر کی وجہ سے پیدا ہونے والی تشویش نے بھی صورتِ حال کو ابتر کیا۔

نیویارک سٹاک ایکسچینج کے فلور پر ایک ٹریڈر مارک اوٹو نے روئٹرز کو بتایا ’معاملات قابو میں ہیں۔ ہم اطلاع کا انتظار کر رہے ہیں۔ کسی قسم کی افراتفری کی کوئی علامات نہیں ہیں۔ ہم یہ جاننے کے انتظار میں ہیں کہ آیا ٹریڈنگ دوبارہ کھلے گی یا اسی طرح کی مزید تفیصیلات۔‘

ادھر ڈبلیو ایس جے ڈاٹ کام اور یونائٹیڈ ایئر لائنز نے بھی بدھ کو تکنیکی خرابیوں کی اطلاع دی ہے۔

ڈبلیو ایس جے ڈاٹ کام دن کے شروع میں پوری طرح بند ہوگئی لیکن دوپہر کے بعد جزوی طور پر کھل گئی۔ ویب سائٹ کے ہوم پیج پر ایک پیغام میں کہا گیا ہے’ڈبلیو ایس جے ڈاٹ کام کو تکنیکی خرابی درپیش ہے۔ جلد ہی پوری سائٹ بحال ہو جائے گی۔‘

یونائٹڈ ایئر لائنز کے مطابق کمپیوٹر کی ایک غلطی کے باعث حالیہ ہفتوں میں امریکہ میں دوسری مرتبہ پروازوں کو معطل کرنا پڑا۔ کمپنی کے مطابق ’نیٹ ورک کنیکٹیوٹی کی خرابی‘ تازہ ترین مسئلے کی وجہ ہے۔

امریکی ہوم لینڈ سکیورٹی کے سیکریٹری جہے جونسن نے کہا کہ یونائٹیڈ اور نیویارک سٹاک ایکسچینج نے جن مسائل کی اطلاع دی ہے اس میں بظاہر ’بری نیت پر مبنی عمل‘ کا دخل نہیں ہے۔

انھوں نے واشنگٹن میں نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے کہا ’میں نے ایئر لائن کے سی ای او سے خود بات کی ہے۔ اس مرحلے پر ہماری معلومات سے دکھائی دیتا ہے کہ دونوں جگہوں پر کسی نے بری نیت سے جان بوجھ کر خرابی نہیں کی۔ فی الوقت ہمیں وال سٹریٹ جنرل کے بارے میں زیادہ معلومات نہیں ہیں سوائے اس کے کہ ان کا نظام پھر سے کام کرنے لگا ہے۔‘

اسی بارے میں