سنیپ چیٹ پر مکہ کو لائیو دکھانے کی کوشش

تصویر کے کاپی رائٹ Getty

مسلمانوں کے مقدس ترین شہر مکہ کو معروف ایپ سنیپ چیٹ کی جانب سے فیچر کیے جانے کے سلسلے میں ایک مہم میں تقریباً تین لاکھ افراد نے#Mecca_live کا ہیش ٹیگ استعمال کیا ہے۔

سنیپ چیٹ نے گذشتہ سال لائیو یعنی براہِ راست کی آپشن متعارف کروائی تھی۔ اس کے ذریعے صارفین براہِ راست شائع کی جانے والی ایک سٹریم میں اپنی ویڈیوز اور تصاویر شائع کر سکیں گے۔ ایپ کے دیگر فنکشنز کی طرح یہ ویڈیوز اور تصاویر چند لمحوں کے بعد غائب ہو جاتی ہیں۔

سنیپ چیٹ عموماً اِن لائیو سٹریمز کے لیے جگہوں کا انتخاب خود کیا کرتی ہے اور گذشتہ ہفتے انھوں نے اسرائیلی دارالحکومت کی ایک سٹریم شائع کی جو کہ تنقید کا مرکز بنی۔ تاہم کئی مرتبہ صارفین کسی ایک مقام کو مقبول بنا کر اس کو فیچر کروانے کی کوشش بھی کرتے ہیں۔ اور اب صارفین کی ایک بڑی تعداد یہ کوشش کر رہی ہے کہ مکہ میں لاکھوں عبادت گزاروں کو بیک وقت عبادت کرتے دیکھایا جائے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter

سعودی عرب کا شہر مکہ اور وہاں موجود مسجد الحرام مسلمانوں کے لیے اہم ترین مقامات ہیں۔ یہاں پیغمبرِ اسلام کی پیدائش ہوئی اور اسلام کی مقدس کتاب قرآن کا نزول ہوا۔ ہر سال لاکھوں مسلمان حج کا فریضہ ادا کرنے اسی شہر کا رخ کرتے ہیں۔ ماہِ رمضان میں بھی دنیا بھر کے مسلمان مکہ میں جا کر عبادت کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔اہم بات یہ ہے کہ اس شہر میں غیر مسلموں کا داخلہ ممنوع ہے۔

سنیپ چیٹ پر مہم میں کوشاں لاکھوں سعودی شہریوں کو امید ہے کہ اس کے ذریعے عبادت میں مصروف مسلمانوں کی بڑی تعداد کا ’خوبصورت‘ منظر دنیا کو دیکھایا جا سکے گا۔ غیر مسلموں کے لیے اس شہر کو دیکھنے کا یہ ایک نایاب موقع ہوگا۔

ایک سعودی شہر نے ٹوئٹر پر لکھا کہ ’وہ کہتے ہیں کہ نیو یارک کھبی سوتا نہیں۔ انھوں نے مکہ ابھی دیکھا نہیں ہے۔ ہمیں #Mecca_live چاہیے۔‘

اس مہم کے کارکنان کی کوشش ہے کہ سنیپ چیٹ ماہِ رمضان کی ستائیسویں شب کو اپنی لائیو کوریج کرے کیونکہ زیادہ با برکت رات تصور کیے جانے کی وجہ سے اس رات مکہ کی مسجد الحرام میں قدرے زیادہ عبادت گزار متوقع ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter
Image caption اس مہم کے کارکنان کی کوشش ہے کہ سنیپ چیٹ ماہِ رمضان کی ستائیسویں شب کو اپنی لائیو کوریج کرے کیونکہ زیادہ با برکت رات تصور کیے جانے کی وجہ سے اس رات مکہ کی مسجد الحرام میں قدرے زیادہ عبادت گزار متوقع ہیں

اگر یہ مہم کامیاب ہو جاتی ہے تو یہ پہلا موقع نہ ہوگا جب کسی سعودی شہر کو سنیپ چیٹ پر فیچر کیا گیا ہو۔ اس سال اپریل میں سعودی دارالحکومت ریاض کو فیچر کیا گیا تھا جس کا مقصد شہر کی عام زندگی کو منظرِ عام پر لانا تھا تاہم اُس بار سعودی زندگی کے حوالے سے موجود مذاق اور غلط تاثرات توجہ کا مرکز بن گئے۔ یہی وجہ ہے کہ کچھ سعودی شےری مکہ کے حوالے سے ایسا دہرائے جانے سے پریشان ہیں۔ ایک شہری نے ٹوئٹر پر لکھا کہ ’مکہ کے رہائشیوں، اگر یہ لائیو ایونٹ منعقد ہوا تو برائے مہربانی مذاق مت کیجیے گا۔‘

ادھر کچھ لوگ اس کے خلاف بھی ہیں۔ ایک شخص نے سوشل میڈیا پر لکھا کہ ’سنیپ چیٹ پر لوگوں کو نازیبا لباس میں دکھایا جاتا ہے۔ آپ ایسے پلیٹ فارم پر دنیا کی پاک ترین جگہ کیسے دیکھا سکتے ہیں۔‘

بی بی سی کی جانب سے رابطہ کیے جانے پر سنیپ چیٹ نے اس سلسلے میں اپنی رائے کا اظہار کرنے سے انکار کر دیا۔

اسی بارے میں