ہزاروں تارکینِ وطن کی چینل ٹنل میں گھسنے کی کوشش

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption تارکینِ وطن کی کوشش کی وجہ سے منگل کو يورو ریل کی سروس بھی متاثر ہوئی

برطانیہ اور فرانس کو ملانے والی ’چینل ٹنل‘ کی منتظم کمپنی کا کہنا ہے کہ تقریباً دو ہزار تارکین وطن نے پیر کی شب فرانسیسی علاقے میں سرنگ کے ٹرمینل میں گھسنے کی کوشش کی تھی۔

چینل ٹنل نامی یہ زیرِ آب سرنگ رودبادِ انگلستان کے راستے دونوں ممالک کو ملاتی ہے اور یورو ٹرین سروس اسی سرنگ کا استعمال کرتی ہے۔

یورو ٹنل کے ترجمان کا کہنا ہے کہ کیلے میں پیش آنے والے اس واقعے میں متعدد افراد زخمی بھی ہوئے ہیں تاہم انھوں نے اس بارے میں مزید تفصیلات فراہم نہیں کیں۔

يوروٹنل کو آئے دن ایسے تارکین وطن سے نمٹنا پڑتا ہے جو سرنگ کے ذریعے غیر قانونی طریقے سے برطانیہ آنا چاہتے ہیں اور ایسے کئی افراد کے لیے یہ کوشش مہلک بھی ثابت ہوتی ہے۔

گزشتہ چند ماہ میں آٹھ افراد سرنگ میں گھسنے کی کوشش میں مارے بھی جا چکے ہیں.

يوروٹنل کے ایک ترجمان نے کہا، ’گذشتہ ڈیڑھ ماہ میں یہ سرنگ میں گھسنے کی سب سے بڑی کوشش تھی۔‘

اس کارروائی کی وجہ سے منگل کو يورو ٹنل ریل کی سروس بھی متاثر ہوئی۔

فرانسیسی خبر رساں ایجنسی اے ایف پی کا کہنا ہے کہ مسافر برطانیہ کی طرف ایک گھنٹہ اور فرانس کی طرف 30 منٹ تک رکے رہے۔

اے ایف پی کے مطابق كیلے میں اس ماہ کے آغاز سے ایسے تین ہزار لوگوں کا پتہ چلا ہے جو وہاں سے برطانیہ میں گھسنے کی کوشش میں تھے۔

ان افراد کا تعلق ایتھیوپيا، اریٹیریا، سوڈان اور افغانستان سے بتایا جاتا ہے۔

غیر قانونی تارکین وطن کی وجہ سے پیش آنے والی مشکلات کی وجہ سے يوروٹنل نے فرانس اور برطانیہ کی حکومتوں سے زرِ تلافی دینے کا مطالبہ کیا ہے۔

اسی بارے میں