آسٹریلوی ساحل پر شارک کے حملے میں ایک اور غوطہ خور زخمی

 اس حملے کے بعد ساحل کے کچھ حصوں کو بند کر دیا گیا ہے

،تصویر کا ذریعہAFP

،تصویر کا کیپشن

اس حملے کے بعد ساحل کے کچھ حصوں کو بند کر دیا گیا ہے

آسٹریلیا میں نیو ساؤتھ ویلز کے علاقے میں شارک مچھلی کے ایک اور حملے میں غوطہ خور زخمی ہو گئے ہیں۔

پولیس کا کہنا ہے کہ جمعے کی شام کو 52 سالہ کریگ آیسن سمندر میں غوطہ خوری کر رہے تھے کہ اچانک ایک شارک نے اُن پر حملہ کیا۔ اس حملے میں غوطہ خور کی ٹانگ اور بازوں پر شدید زخم آئے ہیں۔

پولیس کے مطابق یہ ممکنہ طور پر یہ ایک بڑی شارک مچھلی تھی۔

پولیس نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ ’حملے کے بعد مسٹر آیسن ساحل پر واپس آنے میں کامیاب ہوئے کیونکہ اُن کے ساتھی غوطہ خور نے زخم سے خون روکنے کے لیے پٹی بند دی تھی۔‘

رواں ماہ آسٹریلیا سے تعلق رکھنے والے عالمی فاتح مک فیننگ شارک مچھلی کے ایسے ہی ایک مہلک حملے میں بال بال بچے تھے جبکہ آسٹریلیا میں جزیرے تسمانیہ کے ساحل کے قریب شارک مچھلی نے ایک غوطہ خور شخص کو اس وقت ہلاک کر دیا جب اس کی بیٹی قریب میں ہی سارا منظر دیکھ رہی تھی۔

مسٹر آیس نے دوست، جو اس منظر کے عینی شاہد بھی ہیں انھوں نے مقامی ذرائع ابلاغ کو بتایا کہ ’ہم ایک تیز لہر میں پیر چلا رہے تھے کہ اُس نے کہا پیچھے ہٹو۔ یہاں شارک ہے۔

اس حملے کے بعد ساحل کے کچھ حصوں کو بند کر دیا گیا ہے۔

آسٹریلیا کے ساحل کے قریب شارک کا ایسا مہلک حملہ فروری میں ہوا تھا جب بیلینا کے قریب ایک جاپانی شہری مارا گیا تھا۔

،تصویر کا ذریعہEPA

،تصویر کا کیپشن

مائیک فینگ پر جنوبی افریقہ میں ہونے والا شارک مچھلی کا حملہ لائیو ٹی وی پر لوگوں نے دیکھا