دس چیزیں جن سے گذشتہ ہفتے ہم لاعلم تھے

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption بیٹلز کا شمار دنیا کے مقبول ترین میوزک گروپس میں ہوتا ہے

1۔ مشہورِ زمانہ میوزک گروپ بیٹلز کے درجنوں گانے صرف اس وجہ سے ریکارڈ نہیں ہو سکے کیونکہ جان لینن اور پال میکارٹنی ان کی دھنیں یاد رکھنے میں ناکام رہے تھے۔

مزید جاننے کے لیے ( دی گارڈیئن)

2۔ اگر آپ ’بٹ ڈائل‘ کریں یعنی انجانے میں اپنے موبائل فون سے کسی کو فون کال ملا لیں تو امریکہ میں آپ اس فرد پر اپنی نجی باتیں سننے کا الزام نہیں لگا سکتے۔

مزید جاننے کے لیے (سلیٹ)

3۔ دنیا کی نصف سے زیادہ ثقافتوں میں رومانوی تعلقات میں بوسہ دینے کا رواج نہیں ہے۔

مزید جاننے کے لیے (واشنگٹن پوسٹ)

4۔ برطانیہ میں عدالت یہ طے کر سکتی ہے کہ آپ کی نیکر کی لمبائی کم از کم کتنی ہونی چاہیے۔

مزید جاننے کے لیے (کارفلی، سٹریڈ مناچ اور بارگوڈ کی مہم)

5۔ وینیزویلا میں خواتین کے استعمال میں آنے والے سینیٹری ٹاولز کی قیمت 140 برطانوی پاؤنڈ کے برابر ہے۔

مزید جانیے

Image caption مچھلی گھر میں وقت گزارنا صحت کے لیے مفید ثابت ہو سکتا ہے

6۔ ہیکرز مصنفہ جین آسٹن کی تصنیف سینس اینڈ سینسیبیلٹی کے اقتسابات کا سہارا لے کر وائرس سکینر کی نظر سے بچ نکلتے ہیں۔

مزید جاننے کے لیے (دی انڈیپنڈنٹ)

7۔ لوگ جب مچھلی گھروں میں وقت گزارتے ہیں تو نہ صرف خوشی محسوس کرتے ہیں بلکہ ان کا فشارِ خون بھی کم ہو جاتا ہے۔

مزید جانیے

8۔ جو لوگ پیدل چلتے ہوئے ٹیکسٹ پیغامات بھیجتے ہیں وہ عام زندگی میں بھی رکاوٹوں سے بچنے کے لیے بڑے قدم اٹھاتے ہیں۔

مزید جاننے کے لیے (ڈیلی ٹیلی گراف)

9۔ اگر آپ صرف یہ ظاہر کریں کہ آپ چاکلیٹ کھا رہے ہیں تب بھی چاکلیٹ کی اشتہا پر قابو پا سکتے ہیں۔

مزید جانیے

10۔ مرغے باقاعدہ باری کے تحت طے کرتے ہیں کہ فارم پر موجود بقیہ مرغوں کو صبح کون بیدار کرے گا۔

مزید جاننے کے لیے ( ڈیلی میل)

اسی بارے میں