یروشلم ’گے پرائیڈ پریڈ‘ حملہ، ایک زخمی خاتون دم توڑ گئیں

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption شیرا بانکی کی ہلاکت کے بعد سینکڑوں کی تعداد میں افراد اس جگہ پر جمع ہوئے جہاں انھیں چاقو سے زخمی کیا گیا تھا

یروشلم میں ڈاکٹروں کے مطابق ہم جنس پرستوں کی پرائیڈ پریڈ پر ہونے والے حملے میں زخمی ہونے والی ایک نوجوان خاتون ہلاک ہوگئی ہیں۔

جمعرات کو ہم جنس پرستوں کی ریلی پر چاقو سے مسلح شخص کے حملے سے چھ افراد زخمی ہوئے تھے جن میں سے 16 سالہ شیرا بنکی زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گئی ہیں۔

کٹریہودی یشائی شلیسل نے ایسا ہی ایک حملہ سنہ 2005 میں بھی کیا تھا۔ انھیں موقع پر ہی گرفتار کر لیا گیا تھا۔

وزیراعظم بن یامین نتنیاہو نے سکیورٹی کابینہ کی ملاقات میں اتوار کو کہا ہے کہ اسرائیلی حکومت یہودی شدت پسندی کو برداشت نہیں کرے گی۔

واضح رہے کہ ان کا یہ بیان غرب اردن میں مبینہ طور پر یہودی آباد کاروں کی جانب سے ایک فلسطینی خاندان کے گھر کو آگ لگانے کے واقعے کے بعد سامنے آیا ہے۔ اس واقعے میں ایک 18 ماہ کے بچے کی موت واقع ہوگئی تھی۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption کٹریہودی یشائی شلیسل نے ایسا ہی ایک حملہ سنہ 2005 میں بھی کیا تھا۔ انھیں موقع پر ہی گرفتار کر لیا گیا تھا

دوسری جانب کابینہ نے کٹر قوم پرستوں کی جانب سے فلسطینیوں کے خلاف پرتشدد واقعات پر قابو پانے کے لیے نئے اقدامات کی منظور دی ہے، جن میں مقدمات کے بغیر اسرائیلیوں کی گرفتاری بھی شامل ہے۔

کسی مقدمات کے بغیر حراست میں لینے کی پالیسی اسرائیل فلسطینیوں کے خلاف استعمال کرتا رہا ہے تاہم مبصرین کا خیال ہے کہ اسے اسرائیلیوں کے لیے بہت کم استعمال کیا گیا ہے۔

آگ لگانے کے واقعے کے بعد تاحال کوئی گرفتاری عمل میں نہیں لائی جاسکی۔

ادھر شیرا بانکی کی ہلاکت کے بعد سینکڑوں کی تعداد میں افراد اس جگہ پر جمع ہوئے جہاں انھیں چاقو سے زخمی کیا گیا تھا۔

اسی بارے میں