ماحولیاتی تبدیلی سے بچاؤ کے لیے امریکہ کا ’کلین پاور‘ منصوبہ

Image caption صدر اوباما کا کہنا ہے کہ بغیر سخت اقدامات کے ہمیں زیادہ سخت موسم اور صحت کے زیادہ مسائل کا سامنا رہے گا

امریکی صدر براک اوباما ماحولیاتی تبدیلی سے نمٹنے کے لیے بقول ان کے ’سب سے بڑے اور اہم ترین منصوبے‘ کا اعلان کرنے والے ہیں۔

ماحولیاتی تبدیلی سے نمٹنے کے ترمیم شدہ منصوبے ’کلین پاور پلان‘ کے تحت امریکی بجلی گھروں سے 15 سال کے اندر ایک تہائی تک گرین ہاؤس گیسوں کے اخراج میں کمی کی جائے گی۔

جبکہ توانائی کے شعبے کے افراد نے اس منصوبے کی مخالفت کا عہد کیا ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ صدر اوباما نے ’کوئلے کے خلاف جنگ‘ کا اعلان کر دیا ہے جو کہ امریکہ میں ایک تہائی بجلی گھروں کو بجلی فراہم کرنے کا ذریعہ ہے۔

ترمیم شدہ منصوبے کا مقصد بجلی گھروں سے سنہ 2005 کی سطح کے مقابلے سنہ 2030 تک کاربن کے اخراج میں 32 فی صد تک کمی کی جائے گي۔

ہر ریاست کو کاربن کے اخراج میں کمی کا ایک ہدف دیا جائے گا اور انھیں اپنی تجاویز ماحولیات کے تحفظ کی ایجنسی (ای پی اے) کے سامنے جمع کرنی ہوگی کہ وہ کس طرح ان اہداف کو پورا کریں گے۔

واشنگٹن میں بی بی سی کے ٹام بیٹ مین کا کہنا ہے کہ صدر اوباما کو یہ امید ہوگي کہ پیر کا ان کا اعلان موسمیاتی تبدیلی پر ان کی وراثت کو تحفظ فراہم کرے گا۔

ہمارے نمائندے کا کہنا ہے کہ یہ اقدامات صدر کو گرین ہاؤس گیس کے عالمی سطح پر اخراج میں کمی کے لیے انھیں تقویت فراہم کریں گے کیونکہ اس بابت پیرس میں کانفرنس ہونے والی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption امریکہ میں ایک تہائی کاربن کا اخراج بجلی گھروں سے ہوتا ہے

دوسری جانب کئی ریاستوں کے گورنروں کا کہنا ہے کہ وہ اس منصوبے کو بس نظر انداز کر دیں گے۔

تنقید کے پیش نظر وائٹ ہاؤس نے کہا ہے کہ منصوبے کا اجرا ماحولیات کے تعلق سے صدر اور ان کی کابینہ کی جانب سے ابتدائي اقدام ہیں۔

وائٹ ہاؤس کے جاری کردہ ایک ویڈیو پیغام میں صدر اوباما نے کہا کہ دہائیوں کے اعدادوشمار سے قائم کی جانے والے نئی حد کو تقویت ملتی ہے کیونکہ بغیر ان اقدامات کے ہمیں زیادہ سخت موسم اور صحت کے زیادہ مسائل کا سامنا رہے گا۔

صدر اوباما نے کہا: ’ماحولیاتی تبدیلی کسی دوسری نسل کا مسئلہ نہیں ہے۔ اب تو بالکل نہیں۔‘

انھوں نے کہا: ’میری انتظامیہ امریکہ کے کلین پاور پلان کے حتمی منصوبے کا اعلان کر رہا ہے اور یہ ماحولیاتی تبدیلی سے نمٹنے کے اب تک کے سب سے بڑا اور اہم ترین منصوبہ ہے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption نئے منصوبے کی کوئلے سے متعلق افراد نے مخالفت کی ہے

ڈیموکریٹک پارٹی کی صدارتی عہدے کی امیدوار ہلیری کلنٹن نے کہا ہے کہ اگر وہ اوباما کو جگہ آتی ہیں تو وہ اس منصوبے کا دفاع کریں گی کیونکہ بقول ان کے ’ریپبلیکن کے پاس کوئی قابل عمل حل نہیں ہے اور سچائی تویہ ہے کہ وہ چاہتے ہی نہیں۔‘

نامہ نگاروں کا کہنا ہے کہ منصوبے کے پہلے روپ کے مقابلے اس میں قابل تجدید توانائی کی جانب اہم تبدیلیاں ہیں۔ تاہم یہ امید کی جا رہی ہے کہ امریکہ میں توانائی کی پیداوار میں قدرتی گیس کا حصہ موجودہ سطح تک برقرار رکھا جائے گا۔

امریکہ میں بجلی گھر گرین ہاؤس گیس کے اخراج کا سب سے بڑا ذریعہ ہیں جن کا حصہ ایک تہائي ہے۔

اسی بارے میں