سیاہ فام نوجوان کی برسی کے موقعے پر فائرنگ، ایک نوجوان کی حالت نازک

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption چار پولیس اہلکاروں کو انتظامی رخصت پر بھیج دیا گیا ہے، جبکہ اس نوجوان کا نام اور عمر ظاہر نہیں کی گئی

امریکی ریاست مزوری کے شہر فرگوسن میں سیاہ فام نوجوان مائیکل براؤن کے قتل کی ایک سالہ برسی کے موقعے پر ہونے والے مظاہرے میں زخمی ہونے والے نوجوان کی ’حالت نازک اور غیر مستحکم‘ ہے اور ان کی سرجری کی جا رہی ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ پہلے اس نوجوان نے فائرنگ کی جس کے بعد انھیں گولی ماری گئی۔

یہ واقعہ سیاہ فام نوجوان مائیکل براؤن کے قتل کی ایک سالہ برسی کے موقعے پر پیش آیا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ زخمی ہونے والے نوجوان کے پاس چوری کی ہوئی بندوق تھی اور وہ اس کا پیچھا کر رہے تھے۔

چار پولیس اہلکاروں کو انتظامی رخصت پر بھیج دیا گیا ہے، جبکہ اس نوجوان کا نام اور عمر ظاہر نہیں کی گئی۔

سینٹ لوئس کی مقامی پولیس کے مطابق ایک پولیس افسر نے ’اپنے اوپر ہونے والی گولیوں کی بوچھاڑ کے جواب میں فائرنگ کی ہے،‘ اور یہ کہ ’فائرنگ دو نامعلوم گاڑیوں سے کی گئی تھی۔‘

ٹوئٹر پر شیئر کی جانے والی تصاویر میں ایک سیاہ فام شخص کو زمین پر زخمی حالت میں پڑے دیکھا جا سکتا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption سیاہ فام غیر مسلح نوجوان مائیکل براؤن کو ایک سفید فام پولیس اہلکار نے گولی مار کر ہلاک کر دیا تھا

خیال رہے کہ گذشتہ برس مزوری میں ایک سفید فام پولیس افسر ڈیرن ولسن کی جانب سے کی گئی فائرنگ کے نتیجے میں 18 سالہ نوجوان کی ہلاکت کے واقعے کے بعد ملک بھر میں پولیس کی جانب سے کیے جانے والے امتیازی سلوک کے خلاف عوامی سطح پر مظاہروں کا سلسلہ شروع ہوگیا تھا۔

اتوار کے روز مائیکل براؤن کی پہلی برسی کے موقعے پر فائرنگ کا یہ واقعہ اس وقت پیش آیا جب مظاہرین کی بڑی تعداد برسی کا دن پُرامن طور پر گزارنے کے بعد مغربی فلوریسنٹ ایونیو پر جمع ہوئی تھی۔

اس سے قبل پولیس کی جانب سے مظاہرین کو منتشر ہو جانے کا اعلان بھی کیا گیا تھا اور لاؤڈ سپیکر کے ذریعے کہا گیا تھا کہ ’اب مظاہرین پرامن نہیں رہے۔‘

اِس سے پہلے توار کی صبح جس جگہ مائیکل براؤن کو ہلاک کیا گیا تھا وہاں سینکڑوں افراد نے کھڑے ہوکر ساڑھے چار منٹ کی خاموشی اختیار کی تھی، اس وقت کی یاد میں جب مائیکل براؤن کی لاش سڑک پر بے آسرا پڑی رہی تھی۔

اسی بارے میں