300 سال پرانے سکے مل گئے

سکے تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption حالیہ مہینوں میں یہ سکوں کی دوسری بڑی دریافت ہے

امریکہ میں خزانے کی کھوجیوں نے کہا ہے کہ انھوں نے 18ویں صدی کے ساڑھے چالیس لاکھ ڈالر کی مالیت کے سونے کے ہسپانوی سکے دریافت کیے ہیں۔

یہ 350 سکے گذشتہ 300 سال سے فلوریڈا کی ساحل کے قریب ریت کے نیچے دبے ہوئے تھے۔

یہ سکے 11 ہسپانوی گیلیون میں یعنی وہ بادبانی جہاز جو جنگ یا تجارت کے لیے استعمال کیے جاتے تھے میں موجود تھے جو کیوبا سے سپین جاتے ہوئے سمندری طوفان کی وجہ سے ڈوب گئے تھے۔

فلوریڈا کے پانیوں میں خزانے کی تلاش ایک معروف اور پسندیدہ سرگرمی ہے۔

حالیہ مہینوں میں خزانہ تلاش کرنے والوں کی یہ دوسری بڑی دریافت ہے۔ جون میں ان کو 50 سکے ملے تھے جن کی مالیت تقریباً 10 لاکھ ڈالر تھی۔

350 سکے جولائی کے آخر میں سمندر کی تہہ سے نکالے گئے تھے اور وہ ساحل کے قریب تقریباً ایک میٹر پانی کی تہہ میں ریت کے نیچے دبے ہوئے تھے۔

امریکی ریاستی قانون کے مطابق فلوریڈا اس دریافت میں سے 20 فیصد حصہ اپنے پاس رکھے گا۔

جس تیراک نے یہ سکے دریافت کیے ہیں اس کا نام ولیم بارلیٹ ہے اور انھوں نے یہ بتانے سے انکار کیا ہے کہ یہ حصہ کتنا ہو گا۔

برینٹ برسبن جن کے پاس تباہ شدہ جہازوں کے جملہ حقوق ہیں وہ کہتے ہیں کہ اس دریافت میں نو نایاب سکے بھی ملے ہیں۔

’حالیہ دریافت سے قبل اس قسم کے صرف 20 سکے پائے جاتے تھے۔‘

ان کے مطابق ان سکوں کو سپین کے بادشاہ کے لیے بنایا گیا تھا۔

اسی بارے میں