’ہم جنس شادی کی سند جاری کی جائے‘

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption کینٹکی میں رووان کاؤنٹی کی کلرک کم ڈیوس نے کہا کہ ان کا عقیدہ انھیں اس قسم کے فرائض سرانجام دینے کی اجازت نہیں دیتا

امریکی سپریم کورٹ نے ریاست کینٹکی میں ایک عیسائی اہلکار کو شادی کی سند جاری کرنے کا حکم دیا ہے جس نے ہم جنس شادی کے معاملے میں شادی کی سند دینے سے انکار کر دیا تھا۔

کینٹکی میں رووان کاؤنٹی کی کلرک کم ڈیوس نے کہا کہ ان کا عقیدہ انھیں اس قسم کے فرائض سرانجام دینے کی اجازت نہیں دیتا۔

لیکن سپریم کورٹ نے ان کی دلیل کو مسترد کر دیا اور اب ان کے پاس اس سلسلے میں مزید قانونی چارہ جوئی کی گنجائش ختم ہو گئی ہے۔

ان کے وکیل نے کہا ہے کہ وہ آج رات عبادت میں گزاریں گی اور منگل کی صبح جب ان کا دفتر کھلے گا تو وہ فیصلہ کریں گی کہ انھیں کیا کرنا ہے۔

خیال رہے کہ دو ماہ قبل جب ملک بھر میں ایک ہی جنس کے دو لوگوں کے درمیان شادی کو جائز قرار دیا گیا تب سے کم ڈیوس نے کسی کو کوئی سند جاری نہیں کی۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption ہم جنس پرست شادی کے حامیوں نے امریکی سپریم کورٹ کے باہر مظاہرہ بھی کیا

امریکن سول لبرٹیز یونین نے چار لوگوں کی جانب سے ان پر مقدمہ دائر کر دیا۔ ان چار میں دو ہم جنس پرست تھے۔

بغیر کسی تنقید کے پیر کو اپنے فیصلے میں عدالت عظمیٰ نے مقدمے کی سماعت کو عارضی طور پر معطل کرنے کی ان کی اپیل بھی مسترد کر دی۔

ماہرین کا خیال ہے کہ اگر ڈیوس عدالت کے اس فیصلے کو تسلیم نہیں کرتیں تو انھیں توہین عدالت کے جرم میں سزا ہو سکتی ہے اور ممکن ہے انھیں جیل بھی جانا پڑے۔

اسی بارے میں