’ہاتھ ہوا میں بلند لیکن پولیس نے پھر بھی گولی مار دی‘

Image caption پولیس کا کہنا ہے کہ 41 سالہ گلبرٹ مسلح تھا اور پولیس نے پہلے اس پر قابو پانے کے لیے سٹن گن کا استعمال کیا

امریکی ریاست ٹیکسس میں ایک ویڈیو منظر عام پر آئی ہے جس میں ایک شخص کو پولیس نے اس وقت گولی ماری جب وہ بظاہر اپنے ہاتھ بلند کر کے اپنے آپ کو پولیس کے حوالے کر رہا تھا۔

سین انٹونیو میں مقامی میڈیا کی جانب سے حاصل کی گئی ویڈیو میں دکھایا گیا ہے کہ گلبرٹ فلورز اپنے مکان کے باہر دونوں بازو بلند کیے ہوئے ہیں۔ اس کے بعد گولیاں چلیں اور گلبرٹ نیچے گر گئے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ 41 سالہ گلبرٹ مسلح تھے اور پولیس نے ان پر قابو پانے کے لیے پہلے سٹن گن کا استعمال کیا۔

بیکسر کاؤنٹی ڈسٹرکٹ اٹارنی نیکو لاہڈ کا کہنا ہے کہ یہ ویڈیو بہت ’پریشان کن‘ ہے لیکن انھوں نے لوگوں سے کہا کہ وہ اس ویڈیو سے اس واقعے کے بارے میں کسی نتیجے پر نہ پہنچیں۔

دوسری جانب امریکی خبر رساں ایجنسی اے پی کے مطابق پولیس حکام کا کہنا ہے کہ اسی واقعے کی ایک اور ویڈیو منظر عام پر آئی ہے جس میں صاف ظاہر ہے کہ یہ واقعہ کیسے رونما ہوا۔

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption مکان جہاں گلبرٹ کو گولی ماری گئی

تاہم پولیس حکام نے اس بارے میں مزید تفصیلات دینے سے انکار کر دیا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ اہلکار جائے وقوعہ پر اس وقت پہنچے جب ان کو گھریلو تشدد کی شکار ایک خاتون کی کال آئی جس کے سر پر چاقو سے زخم آیا تھا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ اس عورت نے ایک بچہ بھی گود میں اٹھا رکھا تھا اور ممکنہ طور پر وہ بھی زخمی تھا۔ اس واقعے میں ملوث دونوں اہلکاروں کو تفتیش مکمل ہونے تک انتظامی چھٹی پر بھیج دیا گیا ہے۔ شیرف سوزن پیمرلو کا کہنا ہے ’ظاہر ہے کہ جو ویڈیو میں موجود ہے وہ تفتیش کا باعث ہے۔ لیکن تحقیقات کو مکمل ہونے دیا جائے۔‘

ابتدائی ویڈیو کار میں سوار ایک شخص نے بنائی تھی۔

اطلاعات کے مطابق دونوں پولیس اہلکار جسم پر لگائے گئے کیمروں کے بغیر تھے۔

مقامی میڈیا کے مطابق دونوں پولیس اہلکار اور گلبرٹ ہسپانوی نژاد ہیں۔ یاد رہے کہ مزوری کے شہر فرگوسن میں ایک سفید فام پولیس اہلکار کے ہاتھوں ایک سیاہ فام غیر مسلح نوجوان کی ہلاکت کے بعد پرتشدد واقعات پیش آئے اور امریکہ میں نسلی امتیاز پر ایک نئی بحث شروع ہو گئی تھی۔

اسی بارے میں