جاپان میں سیلاب اور لینڈ سلائیڈنگ، ہزاروں افراد محفوظ مقامات پر منتقل

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption ہمیں اس سے پہلے اتنے بڑے پیمانے پر موسلا دھار بارشوں کا کبھی سامنا نہیں کرنا پڑا۔ اس کی وجہ سے سنگین خطرات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے: محکمۂ موسمیات

جاپان کے شمال مشرقی علاقوں میں شدید بارش اور سیلاب کے بعد لینڈ سلائیڈنگ ہوئی ہے اور 90 ہزار افراد کو محفوظ مقامات پر منتقل کرنا پڑا ہے۔

اطلاعات کے مطابق مٹی کے تودے گرنے اور سیلابی پانی کے باعث ایک شخص کے لاپتہ ہونے کی اطلاع ہے۔

بدھ کے روز سمندر میں شدید مدوجزر کے باعث مرکزی آئچی صوبے میں طوفان کی وجہ سے 125 کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے تیز ہوائیں چلیں جس کے بعد جمعرات کو بھی مشرقی جاپان میں شدید بارشیں ہوئیں۔

جاپانی محکمہ موسمیات کے سربراہ نے ایک ہنگامی پریس کانفرنس میں بتایا کہ ’ہمیں اس سے پہلے اتنے بڑے پیمانے پر موسلا دھار بارشوں کا کبھی سامنا نہیں کرنا پڑا۔ اس کی وجہ سے سنگین مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔‘

جمعرات کو طوفان سے سب سے زیادہ متاثر ہونے والے علاقوں میں دارالحکومت کے شمالی علاقے شامل ہیں۔

آفات سے بچاؤ کے ادارے (فائر اینڈ ڈیزاسٹر منیجمنٹ ایجنسی) کے مطابق 15 افراد زخمی ہوئے ہیں جبکہ دو شدید زخمیوں میں دو بزرگ خواتین شامل ہیں جو تیز ہواؤں کی زد میں آگئی تھیں۔

مقامی میڈیا کی اطلاعات کے مطابق توچگی صوبے کے ایک علاقے کنوما کے ایک گھر پر مٹی کا تودا گرنے کے بعد سے ایک شخص لاپتہ ہوگیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

کچھ علاقوں میں بجلی کا نظام درہم برہم ہوگیا ہے جبکہ ٹوکیو کے کچھ علاقوں میں سیلاب کے خطرات کے پیشِ نظر حکام نے بدھ کے روز دارالحکومت ٹوکیو اور ملک کے دیگر علاقوں میں لوگوں کو محفوظ مقامات پر نقل مکانی کی ہدایت جاری کردی۔

خراب موسم کے باعث ذرائع آمد ورفت بھی بری طرح متاثر ہوئے۔ درجنوں پروازیں منسوخ ہوئی ہیں اور کہیں کہیں بلٹ ٹرین سروسز بھی معطل کردی گئی۔

گذشتہ ماہ طاقتور سمندری طوفان جاپان کے علاقے کیوشو کے جنوب مرکزی جزیرے سے ٹکرایا تھا جس میں کم از کم ایک شخص ہلاک اور 70 افراد زخمی ہوگئے تھے۔

اسی بارے میں