’نانی کرائے پر دستیاب ہے‘

تصویر کے کاپی رائٹ NTV
Image caption رضاکار نینا پولیاکووا کہتی ہیں کہ انھوں نے اپنے بہن بھائیوں کے بچوں اور پوتے پوتیوں کی پرورش میں مدد دی ہے، لیکن ان کے اپنے بچے نہیں ہیں

ایک خیراتی سروس کے تحت، جس کا مقصد ضیعف العمر افراد کی زندگی کی قدر بہتر بنانا ہے، روس میں خاندان کچھ دنوں کے لیے بڑے بوڑھوں کو گھر میں رکھ سکتے ہیں۔

’نانی دادی گھنٹے کے لیے دستیاب ہیں‘ ایسا خیراتی منصوبہ ہے جو ماسکو کے قریب ولادی میر کے علاقے میں شروع کیا گیا ہے۔ اس کا مقصد یہ ہے کہ ایسے خاندان جن کے بچے چھوٹے ہیں کسی ضعیف کو ’مدد اور چھوٹے موٹے کام کے لیے‘ ہفتے میں کئی مرتبہ بغیر کسی معاوضے کے بلا سکتے ہیں۔

روسی ٹیلی وژن چینل این ٹی وی نے اطلاع دی ہے کہ والدین کو پہلے سماجی خدمات کے مقامی ادارے کو اس انتظام کے بارے میں آگاہ کرنا ہو گا اور جب انتظامی رکاوٹیں ختم ہو جائیں تو وہ والدین، نانی دادی کو اپنے بچوں کی دیکھ بھال کے لیے ’ادھار‘ مانگ سکتے ہیں۔

ٹی وی کے مطابق اگست سے شروع کی جانے والی اس خدمت کے لیے 35 رضاکاروں نے پہلے ہی رضا مندی ظاہر کر رکھی ہے اور اسے ماسکو اور پسکوف کے شہروں تک وسعت دینے کا منصوبہ ہے۔

ایک ماں نے ٹی وی چینل سے بات کرتے ہوئے کہا: ’اس سروس سے میں روزانہ کا گھر کا کام کر سکتی ہوں۔ میں ہمیشہ اس خدمت کو استعمال کرتی ہوں۔‘

انھوں نے کہا کہ ابتدا میں وہ اپنے بچوں کو کسی اجنبی کے پاس چھوڑ کر جانے پر کچھ فکرمند تھیں اور ’ہر دس منٹ بعد‘ دیکھ بھال کرنے والی کو فون کرتی تھیں۔

مقامی سوشل سروس کی ایجنسی کی سربراہ اولگا بیلووا کا کہنا ہے: ’کسی ضیعف شخص کے لیے یہ اپنی تسکین اور اپنا تجربہ آگے بڑھانے کا موقع ہے۔‘

تاہم یہ تصور صرف روس تک محدود نہیں۔ کینیڈا کی ایک خاتون نے اس سال کے شروع میں کریگز لسٹ ویب سائٹ کے ذریعے ’سوتیلی دادی‘ بننے کے لیے اپنی خدمات پیش کی تھیں۔

ماسکو میں پہلے ہی ایسی نجی کمپنیاں ہیں جو ’گھنٹے کے لیے شوہر دستیاب ہے‘ جیسی خدمات فراہم کرتی ہیں۔ یہ خدمت انجام دینے والے افراد عموماً وہ کام کرتے ہیں جو روایتی طور پر مردوں کے ذمے ہوتے ہیں۔

ایک کمپنی نے اس سال مارچ میں ’ماسکو ٹائمز‘ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ یہ خدمت نوجوان خاندانوں اور بوڑھوں میں بہت مقبول ہے۔