پناہ گزینوں کی آمد سےمرکل کی مقبولیت کم

تصویر کے کاپی رائٹ AP

جرمنی میں حال ہی میں کیے گئے ایک سروے میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ ملک میں تارکین وطن کی آمد کے باعث چانسلر انگیلا مرکل کی مقبولیت میں کمی واقع ہوئی ہے۔

جرمنی کی براڈکاسٹ کمپنی اے آر ڈی کی جانب سے کیے گئے سروے میں 51 فیصد افراد کا کہنا ہے کہ وہ اتنی بڑی تعداد میں تارکین وطن کی جرمنی میں آمد سے خوفزدہ ہیں۔

جرمنی بارڈر کنٹرول شروع کرے گا

جرمنی کو تارکین وطن کی زیادہ ضرورت کیوں؟

واضح رہے کہ پچھلے ماہ کیے گئے سروے اور اس سروے میں تارکین وطن کی آمد سے لوگوں میں پائی جانے والی بے چینی میں 13 فیصد اضافہ ہوا ہے۔

تاہم 47 فیصد افراد کا کہنا ہے کہ وہ تارکین وطن کی آمد سے خوفزدہ نہیں ہیں۔

دوسری جانب پچھلے ماہ کے مقابلے میں اس ماہ چانسلر انگیلا مرکل کی مقبولیت 63 فیصد سے 54 فیصد رہ گئی ہے۔

فرانسیسی خبر رساں ایجنسی اے ایف پی کے مطابق شروے میں تارکین وطن کی آمد کے باعث لوگوں میں بے چینی میں اضافہ ایسے وقت ہوا جب اس ماہ دو لاکھ 80 ہزار تارکین وطن کی جرمنی میں آمد ہوئی ہے۔

دوسری جانب اس حالیہ سروے میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ چانسلر انگیلا مرکل کی جماعت ہی میں پناہ گزینوں کی پالیسی کے مخالف اور بویریا ریاست کے وزیر اعظم ہورسٹ سیہوفر کی مقبولیت میں 11 پوائنٹس کے ساتھ 39 فیصد ہو گئی ہے۔

سروے میں 48 فیصد افراد نے کہا ہے کہ وہ انگیلا مرکل کی حکومت سے خوش نہیں ہیں جس میں پانچ فیصد کمی واقع ہوئی ہے۔

یاد ہے کہ برلن اب اس کوشش میں ہے کہ معاشی حالات کے تارکین وطن کی بجائے جنگ زدہ علاقے جیسے شام سے آنے والے تارکین وطن کو ترجیح دی جا رہی ہے۔

جرمن حکومت نے منگل کو اعلان کیا تھا کہ قدرے محفوظ ممالک جیسے البانیا، کوسوو اور مونٹینیگرو ہیں سے آئے لوگوں کو ملک بدری کا سامنا ہو گا۔

وائس چانسلر سگمر گیبریئل نے اعتراف کیا کہ کئی قصبوں اور شہروں میں تارکین وطن کی تعداد بہت زیادہ ہو گئی ہے۔

اسی بارے میں