امریکہ ہسپتال حملے کے متاثرین کو زرِتلافی ادا کرے گا

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption گذشتہ ہفتے قندوز میں ہسپتال پر بمباری سے کم از کم 22 عملے کے ارکان اور مریض ہلاک ہوگئے تھے

پینٹاگون نے کہا ہے کہ وہ افغانستان کے شہر قندوز میں امریکی بمباری کا نشانہ بننے والے ڈاکٹرز ود آؤٹ بارڈرز کے ہسپتال میں ہلاک اور زخمی ہونے والوں کو زرتلافی ادا کرے گا۔

گذشتہ ہفتے قندوز میں ہسپتال پر بمباری سے کم از کم 22 عملے کے ارکان اور مریض ہلاک ہوگئے تھے۔

ایم ایس ایف نے جنگی جرم کی تفتیش کا مطالبہ کر دیا

’قندوز میں ہسپتال پر امریکی بمباری ایک غلطی تھی‘

’قندوز کے ہسپتال پر حملے کی آزادانہ تحقیقات کا مطالبہ‘

امریکہ کا کہنا تھا یہ حملہ ایک غلطی تھا اور وہ طالبان کو نشانہ بنانے کی کوشش کر رہے تھے۔

عالمی طبی امدادی ادارے ڈاکٹرز ود آؤٹ بارڈرز (ایم ایس ایف) نے اس حملے کو جنگی جرم قرار دیتے ہوئے بین الاقوامی سطح پر اس کی آزادانہ تحقیقات کا مطالبہ کیا تھا۔

اس حملے میں زخمی ہونے والوں اور ہلاک ہونے والوں کے لواحقین امریکہ کی جانب سے ’تعزیتی معاوضے‘ کے حقدار ہیں۔

پینٹاگون کے ترجمان کا کہنا تھا کہ ’محکمہ دفاع ایم ایس ایف ہسپتال کے افسوس ناک واقعے کے دور رس اثرات کی اہمیت سے واقف ہیں۔‘

پنٹاگون کے مطابق ہسپتال کے مرمت کے لیے بھی رقوم فراہم کی جائیں گی۔

امریکی صدر براک اوباما نے اس واقعے پر ایم ایس ایف کے صدر سے معذرت طلب کی تھی۔

ڈاکٹرز ود آؤٹ بارڈرز اب بھی اپنے 30 سے زائد عملے کے ارکان اور مریضوں کی تلاش کی کوشش کر رہا ہے جو تاحال لاپتہ ہیں۔

اسی بارے میں