’کیا کسی کی چرس کھو گئی ہے؟‘

تصویر کے کاپی رائٹ Norway Police
Image caption ناروے کی پولیس نے چرس کے پیکٹ کے مالک کو اپنی شناخت ظاہر کرنے کی دعوت دی ہے جس سے سوشل میڈیا پر لوگ بہت محظوظ ہوئے ہیں

ناروے میں پولیس نے ایک غیر معمولی اپیل کر کے لوگوں کو حیران کر دیا جس میں انھوں نے ایک کھوئے ہوئے چرس کے پیکٹ کے مالک کو ڈھونڈنے کی کوشش کی۔

مرکزی ناروے کے جزائر ہترا اور فرویا کی مقامی پولیس نے فیس بک پر اپنے صفحے پر پیکٹ میں بند چرس کی تصاویر لگائی جس کے ساتھ انھوں نے یہ پیغام لکھا: ’کیا کسی کی چرس کھو گئی ہے؟‘

یہ پیکٹ فیلان کے علاقے میں ایک شخص کو ملا تھا اور پولیس کا کہنا ہے کہ اس پیکٹ میں 90 گرام چرس موجود ہے، جس کی قیمت کم از کم ایک ہزار ڈالر ہے۔

چرس کے پیکٹ سے متعلق پولیس نے اپنے فیس بک کے صفحے پر لکھا: ’یہ کافی زیادہ رقم ہے اس لیے جس کی بھی چرس گم ہوئی ہے وہ ہترا میں شیرف کے دفتر سے رابطہ کر سکتا ہے۔‘

لیکن اس پیکٹ کا مالک پولیس سے رابطہ کرنے سے پہلے اچھی طرح غور کرے گا۔ ناروے میں چرس جیسی منشیات غیر قانونی ہیں اور جس شخص کے پاس بھی پانچ گرام سے زیادہ چرس ملتی ہے، اسے اکثر عدالت کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

پولیس کی فیس بک پوسٹ نے کئی نارویجینوں کو محظوظ کیا ہے اور اسے اب تک دس ہزار سے زائد لائیکس مل چکے ہیں۔

ایک شخص نے پولیس کی فیس بک پوسٹ کے رد عمل میں لکھا: ’کیا اس پیکٹ کو کوئی گمنام شخص لینے جا سکتا ہے؟‘

اسی بارے میں