’کرکٹ کو سیاست سے الگ رکھا جائے‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption مصباح الحق نے کہا کہ آسٹریلوی ٹیم کا دورہ بنگلہ دیش جس انداز میں ملتوی یا منسوخ کیا گیا وہ بھی افسوس ناک ہے

پاک بھارت کرکٹ روابط کی بحالی کے لیے ہونے والے مذاکرات سے قبل ممبئی میں بی سی سی آئی کے دفتر پر شیوسینا کے حملے کی سنگینی کو کرکٹرز نے بھی شدت سے محسوس کیا ہے اور ان کا خیال ہے کہ اس طرح کے واقعات کے تباہ کن اثرات مرتب ہوتے ہیں۔

پاکستانی کرکٹ ٹیم کے کپتان مصباح الحق کا کہنا ہے کہ سیاست کو ہر صورت میں کھیل سے الگ رکھنا چاہیے اور کھیل کو کھیل کے طور پر دیکھنا چاہیے ۔

انھوں نے کہا کہ یہ صرف پاکستان اور بھارت کی بات نہیں ہے بلکہ اس طرح کا واقعہ کہیں بھی ہو وہ افسوس ناک ہے۔ہمیں اسپورٹس مین اسپرٹ دکھانے کی ضرورت ہے۔

مصباح الحق نے کہا کہ آسٹریلوی ٹیم کا دورہ بنگلہ دیش جس انداز میں ملتوی یا منسوخ کیا گیا وہ بھی افسوس ناک ہے ہم کرکٹرز ہر جگہ کھیلنا چاہتے ہیں اور ہم کسی بھی قسم کی سیاست کرکٹ میں دیکھنا نہیں چاہتے۔

مصباح الحق سے پوچھا گیا کہ موجودہ صورتحال میں کیا پاکستانی ٹیم کی بھارت میں ہونے والے ورلڈ ٹی ٹوئنٹی میں شرکت خطرے میں دکھائی دیتی ہے تو ان کا جواب تھا کہ موجودہ صورتحال خاصی تشویش کا باعث ہے۔

تاہم آنے والے دنوں میں کیا ہونے والا ہے اس بارے میں وہ کچھ نہیں کہہ سکتے لیکن ان حالات میں کھلاڑی یقیناً پریشان ہوتے ہیں۔

وہ اپنی کرکٹ کسی خاص جگہ تک محدود رکھنا نہیں چاہتے بلکہ ان کی خواہش ہوتی ہے کہ وہ ہر جگہ ہر ایک سے کھیلیں اور کھیل سے لطف اٹھائیں۔

اسی بارے میں