مزاحیہ فنکار جمی موریلز گوئٹے مالا کے صدر منتخب

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption موریلز کے یادگار کرداروں میں ایک ایسے کام چور چرواہے کا کردار بھی ہے جو اتفاق سے ملک کا صدر بن جاتا ہے

سیاست میں پہلی بار قدم رکھنے والے ٹیلی وژن کے سابق مزاحیہ فنکار جمی موریلز نے گوئٹے مالا کے صدارتی انتخابات کے دوسرے مرحلے میں کامیابی حاصل کر لی ہے۔

سابقہ خاتون اوّل سینڈرا ٹورس جن کے بارے میں یہ تاثر پایا جاتا ہے کہ ان کا تعلق ملک کی غیر مقبول سیاسی اشرافیہ سے ہے کے مقابلے میں جمی موریلز نے 72 فیصد زیادہ ووٹ حاصل کیے۔

موریلز کی کامیابی کے واضح نتائج کو دیکھتے ہوئے ٹورس نے ووٹوں کی گنتی مکمل ہونے سے قبل ہی اپنی شکست تسلیم کر لی تھی۔

حالیہ انتخابات کا انعقاد صدر اوٹو پیریز مولینا کے استعفے کے ایک ماہ بعد کیا گیا ہے۔ ان پر سیاستدانوں اور کسٹم حکام پر مشتمل بدعنوانی کے گروہ کی سربراہی کا الزام ہے۔

تاہم سابق صدر نے کاروباری حضرات سے محصولات کی مد میں الزامات سے بچنے کے لیے رشوت لینے کے واقعات سے کسی بھی قسم کے تعلق سے انکار کیا ہے۔

ملک گیر مظاہروں کے نتیجے میں صدر پیریز مولینا کی عہدے سے برخواستگی کے بعد صدر منتخب ہونے والے موریلز کو ان کے ووٹرز ملک کے لیے ایک نئی شروعات کے طور پر دیکھ رہے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption سابقہ خاتون اول کو جمی موریلز کے مقابلے میں 72 فیصد کم ووٹ پڑے

ووٹوں کی گنتی مکمل ہونے کے بعد موریلز کا کہنا تھا کہ ’بطور صدر مجھے مینڈیٹ ملا ہے اور گوئٹے مالا کے عوام نے یہ اختیارات مجھے ان بدعنوانیوں کے خلاف دیے ہیں جو ہمیں اندر سے کھا رہی ہیں۔ خدا آپ پر کرم کرے اور آپ کا شکریہ۔‘

گوئٹے مالا کو سیاسی بحران سے نکالنے کے لیے رائے دہندگان کو باہر نکالنے کی کوششوں کے باوجود انتخابات میں ووٹوں کی تعداد بہت کم رہی۔

سینڈرا ٹورس کے خاوند الوارو کُولم کے دورِ صدارت میں سنہ 2008 اور 2012 کے دوران حکومتی سماجی منصوبے خاتون اوّل کے زیر نگرانی تھے۔

موریلز اپنے ووٹرز کو اپنے عاجزانہ پس منظر اور 14 سالہ فنی سفر کے دوران ٹیلی وژن پر پیش ہونے والے اپنے پروگراموں کے لطیفے سنا کے محظوظ کرتے رہے ہیں۔

تاہم انھیں اپنی چند ناقابل عمل پالیسیوں کی وجہ سے تنقید کا سامنا ہے۔ مثال کے طور پر اساتذہ کو جی پی ایس آلے کی مدد سے ٹریک کرنا اور اس بات کو یقینی بنانا کہ وہ اپنی تمام کلاسز میں موجود ہیں شامل ہے جبکہ گوئٹے مالا کے ہر بچے کو آئی فون مہیا کرنا بھی ان کی پالیسی کا حصہ ہے۔

موریلز کے یادگار کرداروں میں ایک ایسے کام چور چرواہے کا کردار بھی ہے جو اتفاق سے ملک کا صدر بن جاتا ہے۔

اسی بارے میں