دنیا کے طاقتور لیڈر کہاں بیٹھتے ہیں؟

برطانیہ میں لیبر پارٹی کے رہنما جیریمی كوربن آپ عالیشان دفتر کو چھوڑ کر ایک چھوٹے دفتر میں جا رہے ہیں۔

ان کا کہنا ہے کہ انھیں اپنا بڑا دفتر ایک ’عالیشان جیل‘ کی طرح لگتا ہے۔

دنیا کے مختلف ملک کے سب سے بڑے رہنماؤں کے دفتر بھی ان کی دلچسپی اور روایت کی عکاسی کرتے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

بھارت کے صدر کی سرکاری رہائش گاہ بہت عالیشان ہے۔ صدارتی محل کی سرکاری ویب سائٹ کے مطابق بھارتی صدر کی سرکاری رہائش گاہ 330 ایکڑ پر پھیلی ہوئی ہے جس کے پانچ ایکڑ پر مرکزی عمارت بنی ہوئی ہے جس میں 340 کمرے ہیں۔

آئیے ایک نظر دنیا کے طاقتور رہنماؤں کے دفاتر پر ڈالتے ہیں۔

10 ڈاؤننگ سٹریٹ پر واقع وزیر اعظم کی رہائش بہت چھوٹی نہیں ہے. ایسا لگتا ہے کہ وہ اس میں آرام سے رہتے ہیں۔اس عمارت میں کچھ اضافی جگہ بھی موجود ہے۔

اس میں کوئی تعجب کی بات نہیں کہ برطانیہ کی لیبر پارٹی کے بائیں بازو کے علمبردار نئے رہنما کو اپنے عالیشان دفتر میں بیٹھ کر بقول ان کے زیادہ خوشی نہیں ہوتی۔

امریکہ کے صدر براک اوباما کے دفتر کی نقل آپ کئی فلموں میں دیکھ چکے ہوں گے۔ امریکی صدر کا دفتر شاید دنیا کے بڑے ممالک میں سب سے بڑا دفتر ہے جہاں سب سے زیادہ سرگرمی دکھائی دیتی ہے۔

اگر سٹائل کی بات کریں تو فرانس کے صدر فرانسوا اولاند کے دفتر کا شاید ہی کوئی ثانی ملے۔ فرانسیسی صدر کا دفتر ایک محل میں واقع ہے۔

جرمن چانسلر انگیلا میرکل کا دفتر خاصا غیر رسمی اور کاروباری احساس دینے والا لگتا ہے۔

ایسا لگتا ہے کہ روس کے صدر ولادیمیر پوتن کو اپنے دفتر میں پرچم لگانے کا شوق ہے۔ ان کے دفتر میں ایک سے زیادہ پرچم دیکھے جا سکتے ہیں۔

چینی صدر شی جن پنگ کے دفتر میں اور باہر بھی پھول پودے خاصی تعداد میں ہیں۔ شاید اتنے زیادہ پودے اور پھول بڑی بڑی ملاقاتوں کا ماحول خوشگوار رکھنے کے لیے لگائے ہیں۔