شامی افواج نے عسکری فضائی اڈے پر دولت اسلامیہ کا محاصرہ ختم کر دیا

Image caption حالیہ کچھ ہفتوں کے دوران لبنان اور ایران کے تعاون سے شام کی افواج نے دولتِ اسلامیہ کے خلاف کارروائیاں تیز کر دی ہیں

شام کے سرکاری ذرائع ابلاغ کا کہنا ہے کہ حکومتی افواج نے شمالی صوبے حلب میں فوج کے فضائی اڈے پر شدت پسند تنظیم دولتِ اسلامیہ کا محاصرہ ختم کر دیا ہے۔

سرکاری نیوز ایجنسی ثنا کے مطابق فوج کے دستوں نے خاوارس ایئر بیس پر موجود فوجیوں سے رابطہ کیا اور وہاں موجود بڑی تعداد میں شدت پسندوں کو باہر نکالا۔

شامی فوج نے حلب کے اہم سپلائی راستے پر قبضہ کر لیا

شام میں روس کے بڑھتے ہوئے مفادات

اس فوجی ایئر بیس پر گذشتہ دو برسوں کے دوران کئی بار جہادیوں نے قبضہ کیا ہے۔

دوسری جانب سرکاری ذرائع ابلاغ کا کہنا ہے کہ بحیرۂ روم کے قریب واقع شہر لتاکیہ میں باغیوں نے شیلنگ کی ہے، جس سے کم سے کم 22 افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

سیئرین آوبزویٹری فار ہیومن رائٹس کے مطابق دو مختلف شہروں میں ہونے والے بم دھماکوں میں بھی کئی افراد شدید زخمی ہوئے ہیں۔

اطلاعات ہیں کہ خاوارس بیس پر موجود حامی افواج کی مدد سے حکومتی افواج نے دولتِ اسلامیہ کا محاصرہ ختم کیا ہے جبکہ حکومتی افواج روسی کی فضائی مدد سے اڈے کے اندر داخل ہوئی۔

شام کی افواج کو یہ کامیابی اُس وقت ملی جب ایک ہفتے قبل حکومتی افواج نے حلب کی اہم شہراہ پر کنٹرول حاصل کیا ہے، یہ سڑک حکومتی رسد کی فراہمی کا واحد راستہ بھی ہے۔

حالیہ کچھ ہفتوں کے دوران لبنان اور ایران کے تعاون سے شام کی افواج نے دولتِ اسلامیہ کے خلاف کارروائیاں تیز کر دی ہیں اور حلب کے اطراف میں شدید فائرنگ کا سلسلہ جاری ہے۔

شام میں حکومتی افواج کی زیادہ تر توجہ حلب شہر کے بجائے جنوبی حلب میں باغیوں کے گڑھ سمجھے جانے والے علاقوں میں شدت پسندوں کا صفایا کرنا پر مرکوز ہے۔

اسی بارے میں