نائجیریا میں سابق مشیر پر دو ارب ڈالر کی چوری کا الزام

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption اپنی گرفتاری کے حکم کے رد عمل میں مسٹر دسوکی نے کہا کہ انھیں ہتھیاروں کی وصولی کے تفتیش کاروں کی طرف سے کوئی بلاوہ نہیں آیا ہے

نائجیریا کے صدر محمد بہاری نے اپنے پیشرو کے سلامتی کے مشیر کو دو ارب ڈالر کی مبینہ چوری کرنے کے الزام میں گرفتار کرنے کا حکم دیا ہے۔

سامبو دسوکی پر الزام عائد ہے کہ انھوں نے 12 ہیلی کاپٹر، چار جنگی طیارے اور اسلحہ جعلی ٹھیکوں پر دیے تھے۔

بوکو حرام نے راکٹ بنانے والی فیکٹری کی تصاویر جاری کر دیں

بوکو حرام کے خلاف لڑائی کے لیے امریکی فوج کیمرون روانہ

ان آلات کو بوکو حرام کے شدت پسندوں کے خلاف لڑائی کرنے کی لیے استعمال کرنے کے لیے رکھا گیا تھا۔

نائجیریا کے فوجیوں نے شکایات کی تھیں کہ فوج کے پاس زیادہ صلاحیتیں ہونے کے باوجود اُن کے پاس لڑنے کے لیے کم ہتھیار موجود ہیں۔

اپنی گرفتاری کے حکم کے رد عمل میں مسٹر دسوکی نے کہا کہ انھیں ہتھیاروں کی وصولی کے تفتیش کاروں کی طرف سے کوئی بلاوہ نہیں آیا ہے، جن کی جانب سے ان پر الزامات عائد کیے گئے تھے۔

جب صدر نے مسٹر دسوکی کی گرفتاری کے لیے حکم جاری کیا تھا تو وہ پہلے سے ہی اپنے گھر میں نظربند تھے۔

Image caption بوکو حرام نے ایک اسلامی ریاست قائم کرنے کے لیے شمال مشرقی نائجیریا میں ہزاروں لوگوں کو ہلاک کیا ہے

ان کی نظر بندی کا حکم ایک مسلسل جاری ہونے والے مقدمے کے تحت دیا گیا تھا جس کے مطابق مسٹر دسوکی نے مبینہ طور پر غیر قانونی اسلحہ رکھا ہوا تھا۔

اُس مقدمے کے دوران عدالت نے مسٹر دسوکی کا پاسپورٹ انھیں واپس فراہم کرنے کا حکم دیا تھا تاکہ وہ برطانیہ کا سفر کر کے ایک بیماری کا علاج کروا سکیں۔

اس مقدمے کی سماعت مسٹر دسوکی کی وطن واپسی پر جاری رکھنے کی توقع تھی لیکن حکومت نے انھیں وطن چھوڑنے کی اجازت دینے سے انکار کر دیا تھا۔

صدر بہاری نے رواں سال مئی میں اقتدار میں آنے سے پہلے گذشتہ حکومت میں بدعنوانی کی تحقیقات کرنے کا وعدہ کیا تھا جس میں مسٹر دسوکی شامل تھے۔

اسی بارے میں