’یہ معصوم ہر روز تمھیں شرمسار کرے گا‘

Image caption اونتون نے اپنے پیغام میں پیرس حملوں میں ملوث شدت پسندوں کو بھی جواب دیا ہے

فرانسیسی شہری اونتون لیغش نے گذشتہ جمعے کو پیرس کے باتاکلان تھیئٹر پر شدت پسندوں کے حملے میں اپنی بیوی ہیلینا کو کھو دیا ہے۔

اونتون نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ فیس بک پر اپنی آنجہانی بیوی کے نام ایک پیغام میں انھیں خراج عقیدت پیش کیا ہے۔

فیس بک پر ان کے اس پیغام کو بڑی تعداد میں لوگوں نے لائیک کیا ہے اور دو لاکھ سے زیادہ بار اس پوسٹ کو شیئر کیا جا چکا ہے۔

پیرس میں حملے کرنے والے کون تھے؟

’پیرس جینا نہیں بھولا‘

قتلِ عام کا آنکھوں دیکھا حال

اس پیغام میں انھوں نے پیرس حملوں میں ملوث شدت پسندوں کو بھی جواب دیا ہے۔

’جمعے کو تم ( دولتِ اسلامیہ کے شدت پسندوں) نے ایک غیر معمولی شخص کی زندگی چھین لی۔ جو میری زندگی کا پیار تھا، میرے بیٹے کی ماں تھی، لیکن میں تم سے نفرت نہیں کروں گا۔‘

’میں نہیں جانتا کہ تم کون ہو اور میں یہ جاننا بھی نہیں چاہتا، آپ مردہ روحیں ہیں۔ میں آپ کو اپنی نفرت کا تحفہ نہیں دو گا۔‘

’آپ یہی نفرت چاہتے ہو لیکن غصے میں اگر ردعمل ظاہر کیا جائے تو کیا آپ ڈروگے؟ تم چاہتے ہو، میں اپنے ساتھی شہریوں پر کفر کی نظر رکھوں۔ اپنی آزادی کی حفاظت کے لیے قربانی دوں۔‘

آپ ہار گئے ہو۔ وہی کھلاڑی ہے اور وہی کھیل ہے۔

’میں نے آج صبح اسے دیکھا تھا۔ کئی راتوں اور دنوں کے انتظار کے بعد۔ وہ اتنی ہی خوبصورت تھی جتنی کہ تب تھی جب وہ جمعے کی شام کو گئی تھی۔اتنی ہی خوبصورت جتنی جب میں 12 سال پہلے اس کی محبت میں پاگل تھا۔‘ جی ہاں، مصائب نے مجھے توڑا دیا ہے۔ بس میں تمھیں اتنی چھوٹی سی جیت دوں گا لیکن یہ درد بھی ہمیشہ نہیں رہے گا۔

میں جانتا ہوں کہ وہ روز میرے ساتھ ہو گی اور ہم دونوں ایک دوسرے سے جنت میں ملیں گے، جہاں آپ کبھی نہیں پہنچ پاؤ گے۔

Image caption اونتون کی اہلیہ اپنے بیٹے کے ساتھ

اب ہم صرف دو ہیں۔ میں اور میرا بیٹا، لیکن ہم دنیا کی تمام افواج سے زیادہ طاقتور ہیں۔

میرے پاس آپ کے لیے زیادہ وقت نہیں ہے۔ مجھے اپنے بیٹے کے پاس جانا ہے، جو اب اپنی دوپہر کی نیند سے اٹھا ہے۔

وہ صرف 17 ماہ کا ہے۔ وہ روز کی طرح اپنا ناشتا کرے گا اور پھر ہم روز کی طرح کھیلیں گے۔

اور آپ کی زندگی کے ہر دن، یہ معصوم بچہ اپنی خوشی اور آزادی سے تمہیں شرمسار کرے گا کیونکہ تمہیں اس کی نفرت بھی نہیں ملے گی۔

اسی بارے میں