میانمار میں مٹی کا تودہ گرنے سے کم سے کم 90 افراد ہلاک

جیڈ یا فیروزہ تصویر کے کاپی رائٹ AFP Getty
Image caption کاچِن کے علاقے سے ملنے والا فیروز دنیا بھر میں عمدہ معیار کے لیے مشہور ہے

میانمار میں مٹی کا تودہ زمین میں دھنس جانے سے کم سے کم 90 افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

یہ واقع سنیچر کی شام ملک کے شمالی حصے میں جیڈ یا فیروزے کی کانوں کے قریب اُس وقت پیش آیا جب کان کا معدنی فضلے کا ڈھیت اچانک زمین دمیں دھنس گیا۔

بی بی سی کے نامہ نگار کا کہنا ہے کہ میانمار کی شمالی ریاست کاچِن میں جہاں یہ سانحہ پیش آیا ہے دشوار گزار اور دور افتادہ علاقہ ہے۔ جس کی وجہ سے مصدقہ اطلاعات تک رسائی انتہائی مشکل ہے۔

ایک مقامی افسر کا حوالہ دیتے ہوئے خبر رساں ایجنسی اے ایف پی نے بتایا ہے کہ لینڈ سلائیڈنگ کے نتیجے میں کم ازکم 90 افراد ہلاک ہوئے ہیں اور ریسکیو اہلکار لاپتہ افراد کی تلاش کر رہے ہیں۔

اس سے قبل ایک مقامی شخص نے بی بی سی کو بتایا تھا کہ اس نے سنیچر کے روز اندھیرا چھانے سے پہلے تک 50 سے زیادہ لاشیں دیکھی ہیں جنھیں ملبے سے نکالا جا رہا تھا۔

یہ واضح نہیں کہ فیروزے کی کانوں سے نکلنے والے فضلے کا ڈھیر کیوں کر اچانک زمین میں دھنس گیا۔

خیال ہے کہ مرنے والے زیادہ تر کچرابین تھے جو کاکن کمپینیوں کے پھینکے ہوئے کچرے میں سے فیروزے کے ناکارہ ٹکڑے تلاش کر کے روزی کماتی تھے۔

یہ علاقہ دنیا بھر میں فیروزے کے انتہائی عمدہ معیار کے لیے مشہور ہے۔ تاہم مٹی کے تودے سرکنے کے واقعات بھی یہاں عام ہیں۔

اسی بارے میں