شارک حملوں سے محفوظ رکھنے والے ڈرونز

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption اگلے سال ’کوفس ہاربر‘ کی ساحل پر فضائی ڈرونز اور سمارٹ ڈرم کی قطاروں کے تجرباتے سلسلے کیے جائیں گے جہاں پر فروری میں ایک شارک حملے میں ایک سرفر ہلاک ہو گئے تھے

آسٹریلیا کے مشرقی ساحل پر ریاست نیو ساؤتھ ویلز کے حکام کے مطابق ساحل پر تیرنے والے لوگوں کو اب ’سمارٹ‘ ڈرم کی قطاروں اور فضائی ڈرونز کے ذریعےشارکس کے حملوں سے محفوظ رکھا جائے گا۔

نیو ساؤتھ ویلز کے شمالی ساحل پر ان ڈرونز اور ڈرمز کا استعمال تجرباتی طور پر کیا جائے گا جہاں پر گذشتہ 12 ماہ سے شارکس کے حملوں کی کئی واقعات پیش آئے ہیں۔

آسٹریلوی ساحل پر شارک کے حملے میں ایک اور غوطہ خور زخمی

بیٹی کے سامنے شارک باپ کو کھا گئی

یہ ڈرونز پانی کی تصاویر کھینچ کر انھیں جی پی ایس کے ذریعے شارکس کی تلاش کرنے والے آپریٹرز کو بھیجیں گے۔

یہ اقدامات شارکس حملوں سے بچاؤ کے انتظام کی حکمت عملی کا حصہ ہیں جس میں حفاظتی بند اور ہیلی کاپٹر کی نگرانی بھی شامل ہیں۔

نیو ساؤتھ ویلز میں بنیادی صنعتوں کے وزیر نیال بلیئر نے ایک بیان میں کہا کہ: ’سرفرز اور تیرنے والوں کو درپیش خطرات کم کرنے کا کوئی آسان طریقہ نہیں ہے۔‘

انھوں نے مزید کہا کہ: ’ہم نئی ٹیکنالوجی کے ذریعے اپنے ساحل کو محفوظ رکھنے کا کوئی طویل مدتی حل ڈھونڈنے کی کوشش بھی کر رہے ہیں۔‘

اگلے سال ’کوفس ہاربر‘ کی ساحل پر فضائی ڈرونز اور سمارٹ ڈرمز کی قطاروں کے تجرباتے کیے جائیں گے جہاں پر فروری میں ایک شارک حملے میں ایک سرفر ہلاک ہو گئے تھے۔

یہ قطاریں متعلقہ اہلکاروں کو اُسی وقت مطلع کریں گی جب کوئی شارک ان میں لگائے گئے جال میں پھنس جائے گی۔

یہ اقدامات ریاست کی حکومت نے ’شارکس پر ایک سربراہی اجلاس‘ کے منعقد ہونے کے بعد لیے ہیں جس میں ماہرین نے شارک حملوں کو کم کرنے کے طریقۂ کار پیش کیے تھے۔

ریاست میں حزب اختلاف کے رکن مک ویچھ نے کہا کہ ان تجرباتی سلسلوں کی مزید تفصیلات معلوم کرنا ضروری ہے۔

ٹی وی چینل اے بی سی نے تجربے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ: ’لگتا ہے کہ یہ تجربہ آسمان سے نازل ہوا ہے۔‘

اسی بارے میں