شمالی کوریا اور جنوبی کوریا کے مابین مذاکرات کا آغاز

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption دونوں ممالک کے درمیان رواں سال اگست میں فوجی کشیدگی کے بعد مذاکراتی عمل میں تعطل پیدا ہوگیا تھا

شمالی کوریا اور جنوبی کوریا کے حکام کے درمیان دونوں ممالک کے درمیان کشیدگی کم کرنے کے حوالے سے مذاکرات ہو رہے ہیں۔

یہ مذاکرات شمالی کوریا کے سرحدی علاقے میں واقع ایک غیرفوجی اور غیر آباد گاؤں پنمنجوم میں ہو رہے ہیں۔

کوریا کے بچھڑے ہوئے خاندانوں کا ملن (تصاویر)

جنگ میں بچھڑے خاندانوں کو ملوانے پر اتفاق

جنوبی اور شمالی کوریا میں مذاکرات پر اتفاق

خیال رہے کہ دونوں ممالک کے درمیان رواں سال اگست میں فوجی کشیدگی کے بعد مذاکراتی عمل میں تعطل پیدا ہوگیا تھا۔

اگست میں جنوبی کوریا کے سرحد علاقے میں ایک بم دھماکے میں دو جنوبی کورین فوجی زخمی ہوگئے تھے۔

جنوبی کوریا کے دارالحکومت سیول میں بی بی سی نامہ نگار سٹیفن ایونز کا کہنا ہے کہ جمعرات کو ہونے والی بات چیت سے کسی قسم کا حتمی نتیجہ سامنے آنے کے امکانات بہت کم ہیں تاہم یہ اہم بات ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان جاری بداعتمادی کے فضا میں بھی یہ مذاکرات ہو رہے ہیں۔

نامہ نگار کے مطابق ان مذاکرات میں کوئی بڑے ایجنڈے شامل نہیں تاہم ان میں ملاقاتیں جاری رکھنے کے عمل کے حوالے سے بات چیت کی جائے گی، بالخصوص اعلیٰ سطح پر۔

جون 2013 میں چھ سالوں میں پہلی مرتبہ اعلیٰ سطحی ملاقات ہونا طے پائی تھی تاہم اس ملاقات سے ایک روز قبل شمالی کوریا کی جانب سے یہ ملاقات جنوبی کوریا کے مذاکرات کار کی سینیارٹی کی بنیاد کر منسوخ کر دی گئی۔

خیال رہے کہ چار اگست کو سرحد پر ہونے والے بم دھماکے کا الزام شمالی کوریا پر عائد کیا گیا تھا جبکہ شمالی کوریا بارودی سرنگ نصب کرنے کی تردید کرتا ہے۔

اس کے بعد جنوبی کوریا نے شمالی کوریا میں پراپیگنڈا نشر کرنا شروع کر دیا تھا جس نے دونوں ممالک کے درمیان ’جنگ جیسی صورتحال‘ پیدا ہوگئی تھی اور سرحد پر فوجیں بلا لی گئی تھیں۔

اسی بارے میں