امریکہ: کولوراڈو کے کلینک میں فائرنگ، تین ہلاک

Image caption ایک مرد حملہ آور کو پولیس نے حراست میں لیا ہے جبکہ ابھی تک اس فائرنگ کے اسباب کی اطلاعات نہیں ہیں

امریکی شہر کولوراڈو سپرنگز میں پولیس کا کہنا ہے کہ پیدائش کنٹرول کے ایک کلینک میں ہونے والی فائرنگ میں تین افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

ہلاک شدگان میں ایک پولیس اہلکار جبکہ دو عام شہری شامل ہیں۔ مرنے والے پولیس اہلکار کا نام میجر سوتھر بتایا گیا ہے جبکہ فائرنگ میں کئی افراد کے زخمی ہونے کی اطلاعات بھی ہیں۔

ایک مرد حملہ آور کو پولیس نے حراست میں لیا ہے جبکہ ابھی تک اس فائرنگ کے اسباب کی اطلاعات نہیں ہیں۔

پولیس نے بتایا کہ ’پلینڈ پیرنٹ ہڈ‘ کلینک میں فائرنگ کا واقعہ کئی گھنٹے تک جاری رہا جس کی وجہ سے متعدد افراد کلینک میں پھنس کر رہ گئے تھے۔

اس سے قبل بتایا گیا تھا کہ 11 افراد زخمی ہیں جن میں پانچ پولیس اہلکار شامل ہیں لیکن اس بات کا علم نہیں ہے کہ آیا مرنے والے ان زخمیوں میں سے ہیں؟

سٹی پولیس نے ایک ٹویٹ میں کہا ہے کہ اس علاقے کی تمام سڑکوں کی ناکہ بندی کردی گئی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption پولیس کے مطابق کئی گھنٹے تک فائرنگ کا تبادلہ ہوتا رہا

ایک پڑوس کے سیلون کے منیجر ڈینیسی سپیلر نے بتایا کہ انھوں نے پانچ منٹ کے اندر کم از کم 20 بار گولی چلنے کی آواز سنی۔

پولیس نے پڑوس کے دکانداروں کو اندر ہی رہنے کا مشورہ دیا ہے۔

پلینڈ پیرنٹ ہڈ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ابھی اس بات کا علم نہیں ہو سکا ہے کہ آیا ان کا ’کلینک ہی اس حملے کا ہدف تھا۔‘

بیان میں کہا گيا: ’ہماری تشویش مریضوں، سٹاف اور قانون نافذ کرنے والوں کی حفاظت تھی۔‘

نیویارک سٹی پولیس نے کہا ہے کہ اس کلینک کے قرب و جوار میں کریٹیکل رسپانس گاڑیاں تعینات کردی گئی ہیں جبکہ شہر کو کوئی خطرہ نہیں ہے۔

پلینڈ پیرنٹ ہڈ صحت کا رضاکار گروپ ہے جس کے ملک بھر میں 700 کلینک ہیں۔ بعض کلینکوں میں اسقاط حمل کی خدمات فراہم کی جاتی ہیں جبکہ اسے اسقاط حمل کے مخالفین کی جانب سے احتجاج کا سامنا رہا ہے۔

اسی بارے میں