پوپ جمہوریہ وسطی افریقہ کے مستقبل سے پر امید

Image caption پوپ فرانسس ان دنوں افریقہ کے دورے پر ہیں

کيتھولک مسيحي پيشوا پوپ فرانسس کا کہنا ہے کہ وہ امید کرتے ہیں خانہ جنگی سے متاثر افریقی ملک جمہوریہ وسطی افریقہ میں اگلے ماہ ہونے والے انتخابات ملک میں ایک نئے باب کے آغاز کا باعث بنیں گے۔

جمہوریہ وسطی افریقہ مسلمان باغیوں اور عیسائی ملیشیا کے درمیان جنگ سے بری طرح متاثر ہوا ہے اور یہ پہلا موقع ہے کہ پوپ فرانسس نے کسی ایسے علاقے کا دورہ کیا ہے جہاں جنگ جاری ہو۔

ملک کے دارالحکومت بینگوئی پہنچنے پر پوپ فرانسس کا کہنا تھا کہ وہ اپنے دورے سے قبل یہاں امید اور امن کا پیغام لانے کے لیے پر عزم تھے۔

پوپ فرانسس جو ان دنوں افریقہ کے دورے پر ہیں یوگینڈا اور کینیا کا دورہ کر کے جمہوریہ وسطی افریقہ پہنچے ہیں۔

صدراتی محل میں اپنے خطاب کے دوران پوپ فرانسس نے مختلف دھڑوں میں اتحاد پر زور دیا۔ ان کا کہنا تھا کہ ’مختلف مذہب، سیاسی خیالات کے حامل افراد اور دیگر نسلی گروہوں کو ایک دوسرے سے ڈرنے کی ضرورت نہیں ہے۔‘

بینگوئی میں اپنے قیام کے دوران پوپ فرانسس عیسائی مذہبی رسومات میں حصہ لینے کے علاوہ مسلمان رہنماؤں سے بھی ملاقات کریں گے۔

اس سے قبل یوگینڈا میں اپنے قیام کے دوران بھی پوپ فرانسس نے عیسائی مذہبی رسومات میں حصہ لیا تھا اور ان کے ساتھ عبادت کرنے کے لیے لاکھوں کی تعداد میں افراد جمع ہوئے تھے۔

جمعے کو کینیا کے دارالحکومت نیروبی میں نوجوانوں سے خطاب کرتے ہوئے پوپ فرانسس نے ان پر زور دیا تھا کہ وہ قبائلی اختلافات کو بھلا کر متحد ہوجائیں۔

اسی بارے میں