’گاڑی گندی ہوئی تو جرمانہ ہو گا‘

تصویر کے کاپی رائٹ REUTERS
Image caption اگر کسی گاڑی کے پہیے، اس کی باڈی یا ڈھانچہ کیچڑ آلود ہوا تو اُس کے مالک پر 16 ڈالر تک کا جرمانہ عائد کیا جائےگا

مشرقی چین کا ایک شہر اپنے بارے میں قائم تاثر کو زائل کرنے کی کوشش کر رہا ہے اور اس کے لیے آغاز وہ اپنی سڑکوں پر موجود گاڑیوں سے کر رہا ہے۔

سرکاری علاقائی اخبار روزنامہ نانجنگ کی رپورٹوں کے مطابق جیانگسو صوبے کے دارالحکومت نانجنگ کے حکام کا کہنا ہے کہ خراب گاڑیوں کے ڈرائیوروں پر مستقبل میں جرمانہ عائد کیا جائے گا کیوں کہ ایسی گاڑیاں شہر کی ظاہری حالت کو متاثر کرتی ہیں۔

رپورٹ کے مطابق اگر کسی گاڑی کے پہیے، اس کی باڈی یا ڈھانچہ کیچڑ آلود ہوا تو اُس کے مالک پر 16 ڈالر تک کا جرمانہ عائد کیا جائےگا اور اُس کے مالک کو ممنوعہ علاقوں کی صفائی کرنے کے لیے کہا جائے گا۔

گاڑی کی نمبر پلیٹ اگر گندگی کے باعث دُھندلی ہوتو جرمانے کی رقم بڑھ جائے گی لیکن سب سے زیادہ جرمانہ کسی بیرونی نقصان یا پھر رنگ و روغن اُکھاڑنے کی صورت میں ہے جس پر ڈرائیور کو 500 سے 2000 ین تک کا جُرمانہ ادا کرنا پڑے گا۔

اسی طرح اگر کوئی ڈرائیور اپنی گاڑیوں پر ’غیرقانونی اشتہار بازی‘ کرتے ہیں تو اُنھیں بھی اتنے ہی جرمانے کی ادائیگی کرنا ہوگی۔ خوش قسمتی سے موٹرسائیکل سوار اس جرمانے سے مستثنیٰ ہوں گے لیکن صرف اس صورت میں کہ اُن کے موٹرسائیکل پرگندگی کی وجہ گیلی یا پھر برفیلی سڑکیں ہوں۔

شہر کی انتظامی کمیٹی کے اہلکار لیو گوازنگ کے مطابق ابتدائی توجہ گاڑیوں کے کام پر دی جائےگی جس دوران بتدریج نئے قوانین کا اطلاق کیا جائے گا۔

لیکن چینی سماجی میڈیا کے صارفین کی بڑی تعداد اِن جرمانوں کی وجہ سے ناخوش ہے۔

چین کی مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ سینا ویبو پر ایک صارف نے سوال پوچھا ہے: ’اگر میری ذاتی کار گندی ہے تو اس سے آپ کا کیا تعلق؟‘

جبکہ ایک اور صارف نے قوانین کو مسترد کرتے ہوئے انھیں ’احمقانہ‘ قرار دیا ہے۔ دیگر کا خیال ہے کہ یہ پیسہ بنانے کی سکیم ہے اور ایک شخص کا خیال ہے کہ حکومت کے پاس اس سے زیادہ بڑے مسائل موجود ہیں جن پر اُسے توجہ دینی چاہیے۔ انھوں نے پوچھا ’اور آپ آلودہ ہوا کے بارے میں کیا کر رہے ہیں؟‘

اسی بارے میں