کیلیفورنیا میں حملہ آوروں کے مکان سے دھماکہ خیز مواد برآمد

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

امریکہ میں پولیس کا کہنا ہے کہ کیلیفورنیا میں سوشل سروس سینٹر میں 14 افراد کی ہلاکت میں مبینہ طور پر ملوث دو مشتبہ افراد کے گھر سے بڑی تعداد میں اسلحہ برآمد ہوا ہے۔

ذہنی مسائل اور بیماریوں کا شکار افراد کی مدد کے مرکز پر بدھ کی صبح ہونے والے حملے میں 21 افراد زخمی بھی ہوئے تھے۔

کیلیفورنیا میں مارے گئے دو مشتبہ افراد کی شناخت

کیلیفورنیا میں فائرنگ، 14 شہری اور دو مشتبہ حملہ آور ہلاک

پولیس کے مطابق دو مشتبہ افراد کی ہلاکت کے بعد چھاپوں کے دوران بارودی آلات، اسحہ اور ہزاروں کی تعداد میں گولیاں برآمد ہوئی ہیں۔

حکام کا کہنا ہے کہ ابھی تک یہ معلوم نہیں ہوسکا ہے کہ 28 سالہ سید رضوان فاروق اور ان کی 27 سالہ ساتھی تاشفین ملک کا اس حملے میں مقصد کیا تھا۔

پولیس نے بتایا ہے کہ ’اس حملے کے لیے کچھ حد تک منصوبہ بندی کی گئی تھی۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption پولیس نے بتایا ہے کہ ’اس حملے کے لیے کچھ حد تک منصوبہ بندی کی گئی تھی‘

سان برنارڈینو پولیس کے سربراہ جیرڈ برگوان کا کہنا ہے کہ ’ایسا معلوم ہوتا ہے کہ یہ دونوں مشتبہ افراد ایک اور حملہ کرنے کی تیاری کر رہے تھے۔‘

ان دونوں مشتبہ افراد نے پولیس کے ساتھ مقابلے میں 76 گولیاں فائ کیں جبکہ پولیس نے 380 گولیاں برسائیں۔ اس مقابلے میں دو پولیس اہلکار بھی زخمی ہوئے۔

امریکہ کے وفاقی تحقیقاتی ادارے ایف بی آئی کا کہنا ہے کہ اس واقعے کی تحقیقات جاری ہیں اور دہشت گردی کے امکانات کو فی الحال مسترد نہیں کیا جا سکتا۔

ایف بی آئی کا کہنا ہے کہ ’ملنے والے ثبوتوں سے حقیقت تک پہنچنے میں مدد ملے گی۔‘

امکان ہے کہ حکام جمعرات کے روز سے اس حملے میں ہلاک یا زخمی ہونے والے افراد کی معلومات جاری کرنا شروع کریں گے۔

امریکہ میں پیدا ہونے والے 28 سالہ رضوان فاروق کے بارے میں ان کے ساتھی کارکنوں نے لاس اینجلس ٹائمز کو بتایا کہ رضوان فاروق نے سعودی عرب کا دورہ کیا اور وہاں سے ایک نئی بیوی کے ساتھ واپس امریکہ آئے۔ رضوان فاروق کی نئی بیوی سے اولاد بھی ہے۔

پولیس کے مطابق رضوان کی ساتھی خاتون کے بارے میں نام اور عمر کے علاوہ مزید معلومات فی الحال دستیاب نہیں ہیں۔

امریکی براک اوباما کا کہنا ہے کہ ’مقامی حکام نے تحقیقات کی تمام تر ذمہ داری ایف بی آئی کے حوالے کر دی ہے۔‘

اسی بارے میں