چار ممالک کا تاپی گیس پائپ لائن منصوبے کا سنگِ بنیاد

Image caption دس ارب ڈالر کی لاگت سے بننے والی 1700 کلومیٹر طویل اس پائپ لائن کو دو سال میں مکمل ہونا ہے۔

پاکستان، افغانستان، بھارت اور ترکمانستان کے سربراہان نے دس ارب ڈالر لاگت کے توانائی کے منصوبے ’تاپی گیس پائپ لائن‘ کا سنگ بنیاد رکھ دیا ہے۔

’پائپ لائن کے تحفظ کے لیے طالبان سے بات کریں گے‘

ریڈیو پاکستان کے مطابق وزیراعظم نواز شریف، افغانستان کے صدر اشرف غنی،ترکمانستان کے صدر قربان گلی بردی محمد وف اور بھارت کے نائب صدر محمد حامد انصاری نے توانائی کے اس بین العلاقائی منصوبے کا سنگِ بنیاد ترکمانستان کے شہر میری میں اتوار کو رکھا۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نواز شریف نے کہا کہ اس بڑے منصوبے کا سنگ بنیاد چار علاقائی ملکوں کی سیاسی بصیرت کا نتیجہ ہے۔ انھوں نے کہا کہ تاپی گیس پائپ لائن منصوبہ امن اور خطے کے ممالک کے درمیان تجارت کے فروغ میں معاون ثابت ہوگا۔

اس موقع پر اپنے خطاب میں افغان صدر اشرف غنی نے کہا کہ یہ منصوبہ اس خطے کا اقتصادی منظرنامہ تبدیل کردے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ اس منصوبے کے آغاز کا سہرا پاکستان اور ترکمانستان کے رہنمائوں کے سر ہے۔

اس موقع پر پاکستان افغانستان اور ترکمانستان نے ایک مفاہمتی یادداشت پر بھی دستخط کئے جس کے تحت پاکستان ترکمانستان سے براستہ افغانستان بجلی درآمد کرے گا۔

اسی بارے میں