غربِ اردن میں تشدد کی تازہ لہر

اسرائیلی پولیس تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption اندرونی یروشلم میں سیکورٹی سخت کردی گئی ہے

اسرائیلی پولیس نے مقبوضہ غرب اردن میں یہودیوں پر چاقو سے حملہ کرنے کے الزام میں دو فلیسطینیوں کو گولی مار کر ہلاک کردیا ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ فلیسطینی حملہ آوروں نے ایک اسرائیلی کو چاقو مار کر ہلاک کر دیا جبکہ ایک اسرائیلی غلطی سے پولیس کی گولی کا نشانہ بنا۔

گزشتہ تین ماہ میں فلیسطینیوں اور یہودیوں کے درمیان تشدد کے واقعات میں اضافہ ہوا ہے۔

تشدد کے ان واقعات میں اب تک 131 فلیسطینی جبکہ 21 اسرائیلی ہلاک ہو چکے ہیں۔

بیشتر اسرائیلی چاقو سے حملے اور گولیوں کا نشانہ بنے ہیں۔

تازہ حملہ بدھ کو صبح یروشلم کے اندرونی شہر کے جافا گیٹ کے سامنے ہوا۔

اسرائیلی پولیس کے ایک ترجمان نے بتایا کہ سرحد پر تعینات پولیس نے اس علاقے میں بعض شہریوں کو ان اسرائیلیوں کی جانب بھاگتے دیکھا تھا جن پر چاقو سے حملہ کیا گیا۔ بعد میں دو لوگوں نے ان پر چاقو سے وار کیے۔

اس واقعے کے دوران ديگر تین اسرائیلیوں پر حملہ ہوا تھا جن کو قریب ہسپتال لے جایا گیا۔ ان میں سے ایک کی حالت نازک بتائی جاتی ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ اس واقعہ کے بعد علاقے میں سیکورٹی مزید سخت کردی گئی ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ کرسمس کے موقع پر بڑی تعداد سیاح یروشلم کا دورہ کریں گے اور یہی وجہ ہے کہ سیکورٹی میں کسی قسم کی بھی ڈھیل نہیں دی جاسکتی ہے۔