سعودی عرب: ہسپتال میں آتشزدگی سے 25 افراد ہلاک، سو سے زائد زخمی

Image caption آگ سے جازان جنرل ہسپتال کے انتہائی نگداشت کا وارڈ اور زچہ و بچہ کا شعبے متاثر ہوئے ہیں

سعودی عرب کے محکمہ شہری دفاع کا کہنا ہے کہ جازان شہر کے ایک ہسپتال میں آگ لگنے کم سے کم سے کم 25 افراد ہلاک اور سو سے زیادہ زخمی ہوئے ہیں۔

یہ واقعہ جمعرات کی صبح جازان کے جنرل ہسپتال میں پیش آیا۔

ہسپتال میں آگ لگنے کے بعد جائے وقوعہ پر فائر بریگیڈ کا عملہ اور امدادی کارکن پہنچے اور آگ پر قابو پانے کی کوشش کی۔

سعودی عرب میں آتشزدگی سے پانچ پاکستانی ہلاک

حکام کا کہنا ہے کہ آگ لگنے کی وجہ تاحال معلوم نہیں ہو سکی ہے تاہم آگ پر قابو پا لیا گیا ہے۔

خبر رساں ادارے اے ایف پی کا کہنا ہے کہ آگ سے جازان جنرل ہسپتال کے انتہائی نگداشت والے وارڈز اور زچہ و بچہ کا شعبہ زیادہ متاثر ہوا ہے۔

محکمہ شہری دفاع نے اپنے ٹویٹر اکاؤنٹ پر کہا ہے کہ ’ہسپتال میں لگی آگ پر قابو پا لیا گیا ہے اور آگ لگنے کی وجوہات معلوم کرنے کے لیے تحقیقات کی جا رہی ہیں۔‘

محکمے کا کہنا ہے آگ بجھانے کے لیے عملے کے 21 افراد کام کر رہے تھے۔

یاد رہے کہ اس سے قبل رواس سال اگست میں سعودی آرامکو کے ایک رہائشی کمپلکس میں لگنے والے آگ میں تقریباً 10 افراد ہلاک اور 259 زخمی ہوئے تھے۔

اس وقت محکمہ شہری دفاع نے کہا تھا کہ یہ آگ رہائشی کمپلکس کی زیر زمین کار پارکنگ کے علاقے میں شارٹ سرکٹ کی وجہ سے لگی تھی۔

اسی بارے میں